After Pakistan China also refused to participate in Afghan meeting in India

0
1018
After Pakistan China also refused to participate in Afghan meeting in India
After Pakistan China also refused to participate in Afghan meeting in India

پاکستان کے بعد چین نے بھی بھارت میں افغان اجلاس میں شرکت سے انکار کر دیا

India was once again defeated at the diplomatic level when China, after Pakistan, also refused to attend the meeting on the situation in Afghanistan.

According to the international news agency, after Pakistan, China also apologized to India for participating in the ‘Delhi Regional Security Dialogue’ on the changing situation in Afghanistan.

India will host a meeting of National Security Advisers and Secretaries of Security Councils of different countries on November 10, which will be chaired by India’s National Security Adviser Ajit Doval.

However, after the refusal of Pakistan and China, the summit is now just seven countries, with national security advisers from Russia, Iran, Kazakhstan, Kyrgyz Republic, Tajikistan, Turkmenistan and Uzbekistan taking part.

India had also invited Pakistan to the meeting but Pakistan had initially turned down the invitation saying that India was in the forefront of worsening the situation in the region and how could it hold a peace meeting.

After Pakistan, now China has also apologized for attending just one day before the start of the meeting and said that it is not possible to attend the meeting due to some engagements but the discussion on Afghan issue will continue.

بھارت کو ایک بار پھر سفارتی سطح پر شکست ہوئی جب پاکستان کے بعد چین نے بھی افغانستان کی صورتحال پر اجلاس میں شرکت سے انکار کر دیا۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق پاکستان کے بعد چین نے بھی افغانستان کی بدلتی صورتحال پر ‘دہلی ریجنل سیکیورٹی ڈائیلاگ’ میں شرکت سے معذرت کر لی۔

بھارت 10 نومبر کو قومی سلامتی کے مشیروں اور مختلف ممالک کی سلامتی کونسلوں کے سیکرٹریوں کے اجلاس کی میزبانی کرے گا، جس کی صدارت بھارت کے قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوول کریں گے۔

تاہم پاکستان اور چین کے انکار کے بعد یہ سربراہی اجلاس اب صرف سات ممالک رہ گیا ہے جس میں روس، ایران، قازقستان، کرغز جمہوریہ، تاجکستان، ترکمانستان اور ازبکستان کے قومی سلامتی کے مشیر حصہ لے رہے ہیں۔

بھارت نے پاکستان کو بھی اجلاس میں مدعو کیا تھا لیکن پاکستان نے ابتدائی طور پر یہ کہہ کر دعوت ٹھکرا دی تھی کہ بھارت خطے کے حالات خراب کرنے میں پیش پیش ہے اور وہ امن اجلاس کیسے کر سکتا ہے۔

پاکستان کے بعد اب چین نے بھی اجلاس شروع ہونے سے صرف ایک روز قبل شرکت سے معذرت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کچھ مصروفیات کے باعث اجلاس میں شرکت ممکن نہیں تاہم افغان معاملے پر بات چیت جاری رہے گی۔