Home Pakistan PTI govt made wrong decisions regarding the economy: Shahbaz Sharif

PTI govt made wrong decisions regarding the economy: Shahbaz Sharif

پی ٹی آئی حکومت نے معیشت کے حوالے سے غلط فیصلے کیے، شہباز شریف

Pakistan Muslim League-Nawaz (PML-N) President and Leader of the Opposition in the National Assembly Shahbaz Sharif said that the leaders of Pakistan Tehreek-e-Insaf (PTI) made wrong decisions regarding the economy which led to rising inflation and debt repayment. Statements related to SBP also contradict the data.

During a press conference in Lahore, PML-N President Shahbaz Sharif said that history has shown that nations that make mistakes do not have their independence left.

“The situation in Pakistan is also very bad and it has become difficult for an ordinary citizen to live here, and if we do not end it, Pakistan could be in danger,” he said.

He said that the mistakes made by the leaders of Pakistan Tehreek-e-Insaf (PTI) with regard to economic decisions are in front of Pakistan. The performance was nothing.

Inflation has risen in all countries of the world after Corona virus but Pakistan ranks third in the world in terms of inflation. Otherwise no one can save us from destruction.

He said that all the opposition including me had warned the government regarding inflation in the country and demanded them to work for the common man but the government did not pay attention.

Shahbaz Sharif said that when he is spoken against, he gets angry and uses such language which is reprehensible and comes down on Galum Gluch.

He said that when Nawaz Sharif’s government came to an end, Pakistan had Rs 30,000 billion in payments and loans and the inflation rate was within 3 to 4 percent. He has embraced the nation.

The Leader of the Opposition said that of course we all have a role to play in bringing Pakistan to this state but if we compare then there is no competition between Nawaz Sharif and this government. When Nawaz Sharif left the government then the country’s GDP It was 5.8 percent and today GDP is sobbing.

He said that Imran Khan had said in 2018 that he would reduce the debts and repayments of Rs. 30,000 billion by Rs. 10 billion but today in just 49 months, Rs. 70% of the loans taken in the history of

The PML-N president said that we took loans and from this we promoted the development of the country.

“They say we have repaid the loans but the SBP figures contradict that. Bangladesh, which we created separately, has a higher GDP than us,” he said.

Talking about the trade deficit, he said that if we compare it from 2018 to today, the dollar has become expensive by Rs. Has arrived

There was a time when Pakistan used to export wheat, sugar and cotton and today we are importing. To say that Imran Khan’s government is honest is a big lie.

He said that this government has to fulfill the conditions of IMF now, we have to think collectively for Pakistan, if these conditions remain then Pakistan will also have to take loans for defense.

Referring to the EVM, he said that when Imran Khan was standing on the container, we also passed reforms in the assembly but at that time the opposition was included in the reforms.

The united opposition was fully represented in the National Assembly session, the opposition has competed together, and I pay tribute to the opposition.

The Leader of the Opposition said that in response to a question regarding the long march and protests of the opposition, he said that the meeting of the opposition would be held on the 6th in which the decision of the long march would be taken.

Shahbaz Sharif strongly condemned the Sialkot incident and hoped that the accused would be arrested as soon as possible.

پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل این) کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنماؤں نے معیشت کے حوالے سے غلط فیصلے کیے جس کی وجہ سے مہنگائی اور قرضوں کی ادائیگی میں اضافہ ہوا۔ . اسٹیٹ بینک سے متعلق بیانات بھی اعداد و شمار سے متصادم ہیں۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کا کہنا تھا کہ تاریخ بتاتی ہے کہ جو قومیں غلطیاں کرتی ہیں ان کی آزادی نہیں رہتی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے حالات بھی بہت خراب ہیں اور یہاں ایک عام شہری کے لیے رہنا مشکل ہو گیا ہے اور اگر ہم نے اسے ختم نہ کیا تو پاکستان خطرے میں پڑ سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ معاشی فیصلوں کے حوالے سے پاکستان تحریک انصاف کے رہنماؤں سے جو غلطیاں ہوئیں وہ پاکستان کے سامنے ہیں۔ کارکردگی کچھ بھی نہیں تھی۔

کورونا وائرس کے بعد دنیا کے تمام ممالک میں مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے لیکن پاکستان مہنگائی کے لحاظ سے دنیا میں تیسرے نمبر پر ہے۔ ورنہ ہمیں تباہی سے کوئی نہیں بچا سکتا۔

انہوں نے کہا کہ مجھ سمیت تمام اپوزیشن نے ملک میں مہنگائی کے حوالے سے حکومت کو خبردار کیا اور عام آدمی کے لیے کام کرنے کا مطالبہ کیا لیکن حکومت نے توجہ نہیں دی۔

شہباز شریف نے کہا کہ جب ان کے خلاف بات کی جاتی ہے تو وہ غصے میں آ جاتے ہیں اور ایسی زبان استعمال کرتے ہیں جو قابل مذمت ہے اور گالم گلوچ پر اتر آتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جب نواز شریف کی حکومت ختم ہوئی تو پاکستان کے پاس ادائیگیوں اور قرضوں کی مد میں 30 ہزار ارب روپے تھے اور مہنگائی کی شرح 3 سے 4 فیصد کے اندر تھی۔ اس نے قوم کو گلے لگا لیا ہے۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ پاکستان کو اس حال تک پہنچانے میں بلاشبہ ہم سب کا کردار ہے لیکن اگر موازنہ کریں تو نواز شریف اور اس حکومت میں کوئی مقابلہ نہیں۔ نواز شریف نے حکومت چھوڑی تو ملک کی جی ڈی پی 5.8 فیصد تھی اور آج جی ڈی پی سسکیاں لے رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے 2018 میں کہا تھا کہ وہ 1000 ارب روپے کے قرضے اور ادائیگیاں کم کریں گے۔ 30,000 ارب روپے 10 ارب لیکن آج صرف 49 ماہ میں روپے۔ کی تاریخ میں لیے گئے قرضوں کا 70 فیصد

مسلم لیگ ن کے صدر نے کہا کہ ہم نے قرضے لیے اور اسی سے ملک کی ترقی کی۔

“وہ کہتے ہیں کہ ہم نے قرضے ادا کر دیے ہیں لیکن اسٹیٹ بینک کے اعداد و شمار اس سے متصادم ہیں۔ بنگلہ دیش، جسے ہم نے الگ سے بنایا تھا، اس کا جی ڈی پی ہم سے زیادہ ہے۔”

تجارتی خسارے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر ہم 2018 سے آج تک کا موازنہ کریں تو ڈالر 10 روپے مہنگا ہو چکا ہے۔ پہنچ گیا ہے۔

ایک وقت تھا جب پاکستان گندم، چینی اور کپاس برآمد کرتا تھا اور آج ہم درآمد کر رہے ہیں۔ عمران خان کی حکومت کو ایماندار کہنا بہت بڑا جھوٹ ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس حکومت کو اب آئی ایم ایف کی شرائط پوری کرنی ہیں، ہمیں پاکستان کے لیے اجتماعی طور پر سوچنا ہوگا، اگر یہی حالات رہے تو پاکستان کو دفاع کے لیے بھی قرضہ لینا پڑے گا۔

ای وی ایم کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جب عمران خان کنٹینر پر کھڑے تھے تو ہم نے بھی اسمبلی میں اصلاحات پاس کی تھیں لیکن اس وقت اصلاحات میں اپوزیشن کو شامل کیا گیا تھا۔

قومی اسمبلی اجلاس میں متحدہ اپوزیشن کی بھرپور نمائندگی کی گئی، اپوزیشن نے مل کر مقابلہ کیا، اپوزیشن کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ اپوزیشن کے لانگ مارچ اور احتجاج کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کا اجلاس 6 تاریخ کو ہوگا جس میں لانگ مارچ کا فیصلہ کیا جائے گا۔

شہباز شریف نے سیالکوٹ واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔

Most Popular

Sindh Emergency Rescue 1122 Jobs 2022 PTS Application Form

Sindh Emergency Rescue Service 1122 is seeking applications from experienced and energetic candidates for Rescue 1122 Sindh Jobs 2022 against the vacant...

200 Rs Prize Bond Draw List 90 Multan Result 2022

Multan, As per the Prize Bond Schedule 2022 issued by the National Savings of Pakistan, The 90th draw of Rs 200 Prize Bond List 2022 is held...

25000 Rs Premium Prize Bond List 10 June 2022 Hyderabad

Hyderabad, 25000 Rs Premium Prize Bond Draw List 6 winners 2022 has announced at Hyderabad on 10 June, 2022, this is the 25000 Rs...

40000 Rs Premium Prize Bond List 21 10 June 2022 Muzaffarabad Winner List

Muzaffarabad, 40000 Rs Premium Prize Bond Draw winners 2022 has announced at Muzaffarabad on June 10, 2022, this is the 40000 Rs Premium Prize...

Recent Comments