PTA Blocks Accounts Of Pakistani Users With Twitter Administration

0
539
PTA Blocks Accounts Of Pakistani Users With Twitter Administration
PTA Blocks Accounts Of Pakistani Users With Twitter Administration

پی ٹی اے نے ٹویٹر ایڈمنسٹریشن کے ساتھ پاکستانی صارفین کے اکاؤنٹس بلاک کردیئے

The Pakistan Telecom Authority (PTA) along with the Twitter administration has started the process of blocking the accounts of Pakistani users by tweeting about the right of self-determination of the people of Indian-occupied Jammu and Kashmir (IOJ and K).

PTA has received 369 complaints from users regarding blocking / suspending their Twitter accounts. After analysis, the PTA reported the apparent suspension of 280 valid accounts / handles for posting in support of the rights of the IOJ and KK people.

PTA has raised its concerns with the Twitter administration that under Indian influence, the social media platform is not only depriving Pakistani users of their basic rights but also violating its own community guidelines. doing.

Twitter has been asked to block the account and review its biased attitude towards Pakistani users who are advocating for the rights of the oppressed people of IOJ&K.

پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی (پی ٹی اے) نے ٹویٹر انتظامیہ کے ساتھ ہندوستانی مقبوضہ جموں وکشمیر (آئی او جے اور کے) کے عوام کے حق خود ارادیت کے بارے میں ٹویٹ کرتے ہوئے پاکستانی صارفین کے اکاؤنٹس کو روکنے کا عمل شروع کردیا ہے۔

پی ٹی اے کو صارفین کی جانب سے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹس کو بلاک کرنے / معطل کرنے سے متعلق 369 شکایات موصول ہوئی ہیں۔ تجزیہ کرنے کے بعد ، پی ٹی اے نے آئی او جے اور کے کے لوگوں کے حقوق کی حمایت میں پوسٹ کرنے پر 280 درست اکاؤنٹس / ہینڈلز کو بظاہر معطل کرنے کی اطلاع دی۔

پی ٹی اے نے ٹویٹر انتظامیہ کے ساتھ اپنے خدشات کو بڑھایا ہے کہ بھارتی اثر و رسوخ کے تحت ، سوشل میڈیا پلیٹ فارم نہ صرف پاکستانی صارفین کو ان کے بنیادی حقوق سے محروم کررہا ہے بلکہ اس کی اپنی برادری کے رہنما خطوط کی بھی خلاف ورزی کررہا ہے۔

ٹویٹر سے کہا گیا ہے کہ وہ اکاونٹ کو بلاک کرکے پاکستانی صارفین کے ساتھ اپنے متعصبانہ روش کا جائزہ لیں جو آئی او جے اور کے مظلوم عوام کے حقوق کی وکالت کررہے ہیں۔