PSL franchises expressed their Concerns about salary of players with PCB

0
838
PSL franchises expressed their Concerns about salary of players with PCB
PSL franchises expressed their Concerns about salary of players with PCB

پی ایس ایل فرنچائزز نے پی سی بی کے ساتھ کھلاڑیوں کی تنخواہوں پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا

The Pakistan Super League (PSL) franchises are reportedly once again unhappy with the Pakistan Cricket Board (PCB). With one month remaining in the draft of the seventh edition of the PSL, the franchises have expressed to the PCB their concern about the salary cap for PSL players.

According to the PSL franchises, the salary limit for players is very high and should be lowered to give franchisees some relief in their financial obligations. PSL franchises have asked the PCB to lower the pay scale as they have revealed that PSL is already one of the highest paid leagues in the world. According to sources, the PCB has rejected their offer because they believe the new celery top will help attract top talent from around the world.

The PCB has decided to increase the salary limit from 7 PSL to 12 1.2 million. In previous editions of the Pakistan Premier T20 competition, the salary cap was set at 0. 0.95 million. This places an additional burden on franchise owners. The six franchise owners asked the PCB for some financial support to adjust to the new pay scale.

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کی فرنچائزز مبینہ طور پر ایک بار پھر پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) سے ناخوش ہیں۔ پی ایس ایل کے ساتویں ایڈیشن کے ڈرافٹ میں ایک ماہ باقی ہے، فرنچائزز نے پی سی بی سے پی ایس ایل کے کھلاڑیوں کے لیے تنخواہ کی حد کے بارے میں اپنی تشویش کا اظہار کیا ہے۔

پی ایس ایل فرنچائزز کے مطابق کھلاڑیوں کے لیے تنخواہ کی حد بہت زیادہ ہے اور فرنچائزز کو ان کی مالی ذمہ داریوں میں کچھ ریلیف دینے کے لیے اسے کم کیا جانا چاہیے۔ پی ایس ایل فرنچائزز نے پی سی بی سے پے سکیل کم کرنے کو کہا ہے کیونکہ انہوں نے انکشاف کیا ہے کہ پی ایس ایل پہلے ہی دنیا کی سب سے زیادہ معاوضہ لینے والی لیگز میں سے ایک ہے۔ ذرائع کے مطابق پی سی بی نے ان کی پیشکش کو مسترد کر دیا ہے کیونکہ انہیں یقین ہے کہ سیلری کا نیا ٹاپ دنیا بھر سے ٹاپ ٹیلنٹ کو راغب کرنے میں مدد دے گا۔

پی سی بی نے تنخواہ کی حد 7 پی ایس ایل سے بڑھا کر 12 لاکھ ڈالر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پاکستان پریمیئر T20 مقابلے کے پچھلے ایڈیشنز میں تنخواہ کی حد 0.95 ملین ڈالر رکھی گئی تھی۔ اس سے فرنچائز مالکان پر اضافی بوجھ پڑتا ہے۔ چھ فرنچائز مالکان نے پی سی بی سے نئے پے سکیل میں ایڈجسٹ کرنے کے لیے کچھ مالی مدد کی درخواست کی۔