Home Pakistan Pakistan Sent People To Jail For Torturing Detainees

Pakistan Sent People To Jail For Torturing Detainees

حراست میں ملزمان پر تشدد کرنے پر پاکستان نے لوگوں کو جیل بھیج دیا

سینیٹ کی فنکشنل کمیٹی برائے ہیومن رائٹس نے منگل کو ایک بل کی منظوری دی جس کے تحت زیر حراست مشتبہ افراد پر تشدد اور موت کی سزا دی گئی ہے۔

تشدد اور حراستی موت (روک تھام اور سزا) ایکٹ 2020 کے مطابق ، کسی کو بھی حراست میں رکھنے پر کسی پر تشدد کرنے کا الزام ثابت ہونے پر اسے تین سال سے زیادہ کے لئے جیل بھیجا جائے گا اور بیس لاکھ روپے جرمانہ بھی کیا جائے گا۔

دوسری طرف ، حراست میں ہراساں کرنا یا موت سے 30 لاکھ روپے جرمانہ ہوگا۔ یہ ناقابل ضمانت جرم ہوگا۔

قانون میں کہا گیا ہے کہ اس جرم کے واقعہ کو یقینی بنانے کے ذمہ دار فرد کو پانچ سال قید اور 10 لاکھ روپے جرمانے کی سزا دی جائے گی اگر وہ اس سے بچنے میں ناکام رہے ہیں۔

کسی مرد کو کسی خاتون کو مشتبہ خاتون کو حراست میں رکھنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

عدالت حراست میں تشدد کا نشانہ بننے والے شکایت کنندہ کا بیان ریکارڈ کرے گی اور پھر اس شخص کا نفسیاتی اور جسمانی معائنہ کرے گی۔ بل کے مطابق ، اگر یہ تشدد ثابت ہوتا ہے تو پھر کیس سیشن کورٹ میں بھیجا جائے گا۔

عدالت اس معاملے پر جرم کے 60 دن کے اندر فیصلہ سنانے کے پابند ہوگی۔ اس سے متعلق اپیل 30 دن میں ہائی کورٹ میں کی جاسکتی ہے۔

قانون میں مزید کہا گیا کہ عدالت میں تمام سماعتوں کے دوران شکایت کنندہ کو سیکیورٹی بھی فراہم کی جائے گی۔

یہ بل پیپلز پارٹی کی سینیٹر شیری رحمان نے سینیٹ میں پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو “سرکاری حراست میں ہونے والے اکثر پُرتشدد زیادتیوں کو روکنے کی بری طرح ضرورت ہے جو ہمارا کمزور اور غیر طاقت ور چہرہ ہے۔”

سوشل میڈیا پر خاص طور پر انسانی حقوق کے محافظوں کی طرف سے اس قانون کی تعریف کی گئی ہے۔

The Senate Functional Committee on Human Rights on Tuesday approved a bill that would have sentenced detainees to torture and death.

According to the Violence and Detention Death (Prevention and Punishment) Act 2020, anyone found guilty of torturing a detainee will be jailed for more than three years and fined Rs 2 million. Will

On the other hand, harassment or death in custody would result in a fine of Rs 3 million. It would be a non-bailable offense.

The law states that the person responsible for ensuring the occurrence of this crime will be sentenced to five years imprisonment and a fine of Rs. 1 million if he fails to avoid it.

No man will be allowed to detain a woman suspect.

The court will record the statement of the complainant who was tortured in custody and then conduct a psychological and physical examination of the person. According to the bill, if the violence is proven, then the case will be sent to the Sessions Court.

The court will be bound to rule on the matter within 60 days of the crime. An appeal can be made to the High Court within 30 days.

The law added that the complainant would also be provided security during all court hearings.

The bill was introduced in the Senate by PPP Senator Sherry Rehman. He said the country “desperately needs to stop the most violent abuses in government custody, which is our weak and powerless face.”

The law has been praised on social media, especially by human rights defenders.

Most Popular

Sindh Emergency Rescue 1122 Jobs 2022 PTS Application Form

Sindh Emergency Rescue Service 1122 is seeking applications from experienced and energetic candidates for Rescue 1122 Sindh Jobs 2022 against the vacant...

200 Rs Prize Bond Draw List 90 Multan Result 2022

Multan, As per the Prize Bond Schedule 2022 issued by the National Savings of Pakistan, The 90th draw of Rs 200 Prize Bond List 2022 is held...

25000 Rs Premium Prize Bond List 10 June 2022 Hyderabad

Hyderabad, 25000 Rs Premium Prize Bond Draw List 6 winners 2022 has announced at Hyderabad on 10 June, 2022, this is the 25000 Rs...

40000 Rs Premium Prize Bond List 21 10 June 2022 Muzaffarabad Winner List

Muzaffarabad, 40000 Rs Premium Prize Bond Draw winners 2022 has announced at Muzaffarabad on June 10, 2022, this is the 40000 Rs Premium Prize...

Recent Comments