Opposition considers a no-confidence motion against NA Speaker Asad Qaiser

0
1412
Opposition considers a no-confidence motion against NA Speaker Asad Qaiser
Opposition considers a no-confidence motion against NA Speaker Asad Qaiser

اپوزیشن کا سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر غور

Sources said that the opposition is considering a no-confidence motion against National Assembly Speaker Asad Qaiser.

The PPP approached the PML-N to bring a no-confidence motion against the Chairman Senate and the Speaker National Assembly.

Officials familiar with the progress said the PPP’s position was that in the current situation, many members of the government would vote against the speaker because of the secret ballot.

However, the PML-N has advised the PPP not to take any hasty decision.

PML-N further said that the steering committee of the opposition should adopt a joint strategy on any issue against the government.

If the opposition decides to file a no-confidence motion against the speaker of the National Assembly, it will need the support of at least 172 MNAs.

ذرائع نے بتایا کہ اپوزیشن قومی اسمبلی کے سپیکر اسد قیصر کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش کرنے پر غور کر رہی ہے۔

پیپلز پارٹی نے چیئرمین سینیٹ اور اسپیکر قومی اسمبلی کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کے لیے مسلم لیگ (ن) سے رابطہ کرلیا۔

پیشرفت سے آگاہ عہدیداروں کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی کا موقف ہے کہ موجودہ صورتحال میں خفیہ رائے شماری کی وجہ سے حکومت کے بہت سے ارکان اسپیکر کے خلاف ووٹ دیں گے۔

تاہم مسلم لیگ ن نے پیپلز پارٹی کو جلد بازی میں کوئی فیصلہ نہ کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

مسلم لیگ ن کا مزید کہنا تھا کہ اپوزیشن کی اسٹیئرنگ کمیٹی حکومت کے خلاف کسی بھی معاملے پر مشترکہ حکمت عملی اپنائے۔

اگر اپوزیشن قومی اسمبلی کے اسپیکر کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش کرنے کا فیصلہ کرتی ہے تو اسے کم از کم 172 ایم این ایز کی حمایت درکار ہوگی۔