NAB sends summons to Maryam Nawaz at jati Umra

0
1637
NAB sends summons to Maryam Nawaz at jati Umra
NAB sends summons to Maryam Nawaz at jati Umra

نیب نے مریم نواز کا سمن جاتی امرہ بھیج دیا

قومی احتساب بیورو (نیب) نے رائے ونڈ میں 200 ایکڑ اراضی کی غیرقانونی منتقلی سے متعلق کیس میں پاکستان مسلم لیگ نواز (ن لیگ) کی نائب صدر مریم نواز کو جمعہ عمر کو طلب کیا ہے۔

اینٹی کرپشن واچ ڈاگ نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما کو ایک سوالیہ نشان بھیجا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ زمین کس طرح خریدی گئی اور اسے زراعت یا تجارتی مقصد کے لئے استعمال کیا گیا۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ اینٹی گرافٹ باڈی نے جمعرات کو مریم نواز کو 11 اگست کو اس کے سامنے پیش ہونے کی ہدایت کی تھی اور آج انہیں سمن عمرہ میں رہائش گاہ بھیج دیا گیا ہے۔

200 ایکڑ پر مشتمل پراپرٹی 2014 میں مریم نواز کے نام پر منتقل کی گئی تھی جبکہ 100 کنال سابق وزیر اعظم نواز شریف اور سابق وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف ، مریم کے والد اور چچا کو منتقل کردی گئیں۔

معلوم ہوا ہے کہ اراضی کی منتقلی کے دوران لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی (ایل ڈی اے) کے قواعد و ضوابط کو نظرانداز کیا گیا تھا۔ مزید برآں ، شریف خاندان کے علاقے کے چاروں طرف تعمیرات روکنے کے لئے پراپرٹی کو گرین لینڈ قرار دیا گیا تھا۔

The National Accountability Bureau (NAB) sent the summons to the Pakistan Muslim League-Nawaz (PML-N) Vice President, Maryam Nawaz, to Jati Umrah in a case related to the illegal transfer of 200 acres of land in Raiwind.

The anti-corruption watchdog also sent a questionnaire to the PML-N leader asking how the land was bought and used for agricultural or commercial purposes.

It should be noted here that the anti-transplant body directed Maryam Nawaz on Thursday to appear before him on August 11th and the subpoena was sent to her residence in Jati Umrah today.

The 200 acre property was transferred in 2014 on behalf of Maryam Nawaz, while 100 canals each were transferred to former Prime Minister Nawaz Sharif and former Punjab CM Shehbaz Sharif – father and uncle of Maryam.

The Lahore Development Authority (LDA) rules and regulations were found to have been ignored in the transfer of the land. In addition, the property was designated as green land to stop construction around the Sharif family’s property.