Karachi is not begging from CM: Asad Umar

0
584
Karachi is not begging from CM: Asad Umar
Karachi is not begging from CM: Asad UmarKarachi is not begging from CM: Asad Umar

کراچی وزیراعلیٰ سے بھیک نہیں مانگ رہا: اسد عمر

Federal Minister for Planning Asad Umar has said that Karachi is not begging from Sindh Chief Minister Murad Ali Shah, it is time for Sindh to decide.

Addressing the participants of Karachi Stakeholders Conference against Local Government System of Sindh under PTI, Federal Minister Asad Umar said that he and Prime Minister Imran Khan have signed the petition on the existing local government system in Sindh. It is present in the Supreme Court. Politics is in the hands of a few families. If the people are not empowered then the problems will not be solved. We are ready to sit together and solve the problems. The Chief Minister has not fulfilled his promise of devolution.

Asad Umar said that the capital of Sindh is not begging from the Chief Minister, we will continue to raise voice in the Sindh Assembly, National Assembly and Senate, the voice of the opposition in the Sindh Assembly can not be silenced, it is not a matter of provincial sovereignty against the Constitution of Pakistan. We are going to the courts on this issue. We have started a movement on this issue all over Sindh. We have to take it to a decisive stage with the people of Sindh.

The Federal Minister said that today we have to formulate a plan of action, this is not a problem of any political party, the rulers come through this system and become richer and richer, not face, the system must be changed, there should be a system that If elected, he will be forced to work.

He further said that the Local Government Act of 2013 is not in accordance with the constitution and it needs to be changed. Until the people are empowered, the basic problems of the country will not be solved. Local governments must be strengthened.

وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ کراچی وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ سے بھیک نہیں مانگ رہا، سندھ فیصلہ کرنے کا وقت ہے۔

پی ٹی آئی کے تحت سندھ کے بلدیاتی نظام کے خلاف کراچی اسٹیک ہولڈرز کانفرنس کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر اسد عمر نے کہا کہ میں نے اور وزیراعظم عمران خان نے سندھ میں موجودہ بلدیاتی نظام سے متعلق پٹیشن پر دستخط کیے ہیں۔ یہ سپریم کورٹ میں موجود ہے۔ سیاست چند خاندانوں کے ہاتھ میں ہے۔ عوام بااختیار نہ ہوں گے تو مسائل حل نہیں ہوں گے۔ ہم مل بیٹھ کر مسائل حل کرنے کے لیے تیار ہیں۔ وزیراعلیٰ نے اپنا وعدہ پورا نہیں کیا۔

اسد عمر کا کہنا تھا کہ سندھ کا دارالحکومت وزیراعلیٰ سے بھیک نہیں مانگ رہا، ہم سندھ اسمبلی، قومی اسمبلی اور سینیٹ میں آواز اٹھاتے رہیں گے، سندھ اسمبلی میں اپوزیشن کی آواز کو خاموش نہیں کیا جاسکتا، یہ کوئی نہیں ہے۔ آئین پاکستان کے خلاف صوبائی خودمختاری کا معاملہ۔ ہم اس معاملے پر عدالتوں میں جا رہے ہیں۔ ہم نے اس معاملے پر پورے سندھ میں تحریک شروع کر رکھی ہے۔ ہمیں سندھ کے عوام کے ساتھ مل کر اسے فیصلہ کن مرحلے تک لے جانا ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ آج ہمیں لائحہ عمل بنانا ہے، یہ کسی سیاسی جماعت کا مسئلہ نہیں، حکمران اس نظام کے ذریعے آتے ہیں اور امیر سے امیر تر ہوتے ہیں، چہرے نہیں، نظام بدلنا ہوگا، ایک ہونا چاہیے۔ وہ نظام کہ اگر منتخب ہوا تو اسے کام کرنے پر مجبور کیا جائے گا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ 2013 کا لوکل گورنمنٹ ایکٹ آئین کے مطابق نہیں ہے اسے تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ جب تک عوام کو بااختیار نہیں بنایا جائے گا ملک کے بنیادی مسائل حل نہیں ہوں گے۔ مقامی حکومتوں کو مضبوط کرنا ہوگا۔