Details of MoU between the government and IPPs came to light

0
501
Details of MoU between the government and IPPs came to light
Details of MoU between the government and IPPs came to light

حکومت اور آئی پی پیز کے مابین ایم او یو کی تفصیلات سامنے آئیں

بڑے قومی مفاد میں آزاد بجلی پروڈیوسرز (آئی پی پیز) نے رضاکارانہ طور پر مراعات دینے پر اتفاق کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ، آئی پی پیز نے قرض کی مدت میں پانچ سال کی توسیع پر اتفاق کیا ہے جس کے نتیجے میں بجلی کے نرخوں میں نمایاں کمی سے صارفین کو اربوں روپے کا فائدہ ہوا ہے۔

اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا کہ مقامی سرمایہ کاروں کے لئے ، ڈالر کی قیمتوں میں کمی کے بغیر روپے کی شرائط میں آر او ای کو تبدیل کیا جائے گا۔

ونڈ پاور پلانٹوں کو شمسی پلانٹ لگانے کی اجازت دینے کی تجویز بھی کی گئی ہے۔ دونوں فریقوں نے دیر سے ادائیگی سرچارج کی شرح میں 4.5 فیصد سے 2 فیصد تک کمی پر بھی ایک سمجھوتہ حاصل کرلیا ہے۔

In the larger national interest, independent power producers (IPPs) have agreed to provide voluntary incentives.

According to the details, IPPs have agreed to extend the loan period by five years, as a result of which consumers have benefited by billions of rupees due to significant reduction in electricity rates.

It was also agreed that for local investors, the ROE would be converted to rupee terms without depreciation of the dollar.

It is also proposed to allow wind power plants to install solar plants. The two sides also agreed to reduce the late payment surcharge from 4.5% to 2%.