Babar AzamNeeds A Little Improvement: Yunus Khan

0
611
Sarfaraz And Babar
Sarfaraz And Babar

بابر اعظم کو تھوڑا سا بہتر کرنے کی ضرورت ہے: یونس خان

پاکستان کے نئے بیٹنگ کوچ یونس خان کا خیال ہے کہ نمبر ون ٹی 20 کے بیٹس مین بابر اعظم کو کمال لانے کے لئے تھوڑی سی اور بہتری کی ضرورت ہے۔

ٹیلی کمیونیکیشن کے ذریعہ صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے یونس خان نے بیٹس مین کے ساتھ کام کرنے اور نوجوانوں کو معیاری اشارے پہنچانے میں اپنے تجربے کو بروئے کار لانے کے منصوبوں کے بارے میں آگاہ کیا۔

نومنتخب بیٹنگ کوچ نے وائٹ بال فارمیٹ کے کپتان بابر پر روشنی ڈالی اور کہا کہ گریٹس کی فہرست میں شامل ہونے کے لئے انہیں کچھ وقت درکار ہے۔

یونس خان نے کہا کہ “میرا فارمولا آسان ہے جو بھی میرے پاس ہے وہ بلے بازوں تک پہنچانا ہے۔ میری ترجیح یہ ہے کہ نوجوانوں کو کھیل کے بارے میں آگاہی دی جائے اور ان کو اتنا مضبوط بنایا جائے کہ وہ میدان پر اور اس سے باہر جا کے کھیل سکیں ، ”

بیٹنگ کوچ نے مزید کہا کہ جہاں تک بابر کا تعلق ہے تو میں سمجھتا ہوں کہ اسے کچھ جگہ کی ضرورت ہے۔ میں پہلے ہی کہہ چکا ہوں کہ ان کا موازنہ ویرات کوہلی سے کرنا بہت جلد تھا۔

Pakistan’s new batting coach Younis Khan believes that Babar Azam, the number one T20 batsman, needs a little more improvement to bring him to perfection.

Talking to reporters through telecommunication, Younis Khan shared his plans to work with Batesman and use his experience in imparting quality signals to the youth.

The newly elected batting coach highlighted Babar, the captain of the White Ball format, and said that he needed some time to be included in the Great’s list.

Younis Khan told that,

“My formula is simple which is to deliver whatever I have to the batsmen. My priority will be to educate youngsters about the game and make them strong enough to stand firm on and off the field”

“As far as Babar is concerned, I think he needs some space,” the batting coach added. I have already said that it was too early to compare him with Virat Kohli.

Younis moreover said that,

”Maybe after 5 years, he can be comparable with Virat but at this point in time, he needs some space. I hope he continues playing the way he does and then surpasses some of the greats such as Javed Miandad and Sachin Tendulkar”