Home World US shown flexibility in its position on Afghanistan

US shown flexibility in its position on Afghanistan

امریکہ نے افغانستان پر اپنے موقف میں لچک کا مظاہرہ کیا

The US State Department says the United States, along with a number of UN agencies, is considering ways to invest in the Afghan economy.

The announcement, made at a White House briefing, came after a statement from a State Department official in Islamabad yesterday.

The statement said the United States would show greater flexibility in imposing economic sanctions on Afghanistan.

This week, 39 US lawmakers wrote letters to the US Secretary of State and Secretary of the Treasury asking them to help restore Afghanistan’s frozen assets and help rebuild the Afghan economy.

The letter was also supported by the United Nations.

During a briefing in Washington, State Department spokesman Ned Price said, “We are working with various UN agencies, including the UNDP, to find ways to invest in the Afghan economy and to provide humanitarian assistance.” ‘

He added that the United States had last week backed the release of 28 280 million in humanitarian aid from the World Bank.

He said the United States had sent کروڑ 208 million in humanitarian aid to Afghanistan since August, bringing the total to 47 475 million this year.

The US official acknowledged that Afghanistan now needs more help than humanitarian aid, and that is why the US Treasury Department has eased sanctions on Afghanistan after August 15.

The flexibility of the United States in its stance on Afghanistan came after several calls for a review of sanctions imposed on the Afghan Taliban government.

During the sanctions, the United States also froze 9 9.5 billion in Afghan assets and debts.

The move dealt a severe blow to the financially dependent Afghan economy, as well as exacerbating the humanitarian crisis caused by four decades of civil war and drought.

A State Department spokesman said in a briefing that the economic crisis in Afghanistan was not due to the current situation in particular, but was “something that existed even before the withdrawal of US troops and has intensified.”

“We understand that the situation in Afghanistan needs an immediate response, now that the winter months have begun and we are concerned about the well-being of the Afghan people,” he added.

He said that US Special Representative for Afghanistan Tom West had attended a recent meeting of the Organization of Islamic Cooperation (OIC) in Islamabad where it was decided to set up a trust fund to provide financial assistance to the Afghan people.

He said the United States could not help Afghanistan alone, adding that other countries should also come forward to help Afghanistan, especially those in the region that are close to Afghanistan and much more for the Afghan people. They can and should.

The spokesman, speaking on condition of anonymity, said that there are countries in the region which have a stable and secure Afghanistan in their interest and they have the potential to make it possible.

امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا ہے کہ امریکہ اقوام متحدہ کی متعدد ایجنسیوں کے ساتھ مل کر افغان معیشت میں سرمایہ کاری کے طریقوں پر غور کر رہا ہے۔

یہ اعلان، وائٹ ہاؤس کی بریفنگ میں کیا گیا، کل اسلام آباد میں محکمہ خارجہ کے ایک اہلکار کے ایک بیان کے بعد سامنے آیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکہ افغانستان پر اقتصادی پابندیاں عائد کرنے میں زیادہ لچک دکھائے گا۔

اس ہفتے، 39 امریکی قانون سازوں نے امریکی وزیر خارجہ اور وزیر خزانہ کو خطوط لکھے جس میں ان سے کہا گیا کہ وہ افغانستان کے منجمد اثاثوں کی بحالی اور افغان معیشت کی تعمیر نو میں مدد کریں۔

اس خط کو اقوام متحدہ کی طرف سے بھی حمایت حاصل تھی۔

واشنگٹن میں ایک بریفنگ کے دوران اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے ترجمان نیڈ پرائس نے کہا کہ ہم اقوام متحدہ کے مختلف اداروں کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں جن میں یو این ڈی پی بھی شامل ہے، تاکہ افغان معیشت میں سرمایہ کاری کے طریقے تلاش کیے جا سکیں اور انسانی امداد فراہم کی جا سکے۔ ‘

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے گزشتہ ہفتے عالمی بینک کی جانب سے انسانی بنیادوں پر 28 کروڑ ڈالر کی امداد کے اجراء کی حمایت کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ نے اگست سے اب تک افغانستان کو 208 ملین ڈالر کی انسانی امداد بھیجی ہے جس سے اس سال مجموعی طور پر 475 ملین ڈالر تک پہنچ گئی ہے۔

امریکی اہلکار نے تسلیم کیا کہ افغانستان کو اب انسانی امداد سے زیادہ مدد کی ضرورت ہے اور یہی وجہ ہے کہ امریکی محکمہ خزانہ نے 15 اگست کے بعد افغانستان پر عائد پابندیوں میں نرمی کی ہے۔

امریکہ کی جانب سے افغانستان کے بارے میں اپنے موقف میں لچک افغان طالبان کی حکومت پر عائد پابندیوں پر نظرثانی کے کئی مطالبات کے بعد سامنے آئی ہے۔

پابندیوں کے دوران امریکا نے 9.5 ارب ڈالر کے افغان اثاثے اور قرضے بھی منجمد کر دیے۔

اس اقدام نے مالی طور پر انحصار کرنے والی افغان معیشت کو شدید دھچکا پہنچایا اور ساتھ ہی ساتھ چار دہائیوں کی خانہ جنگی اور خشک سالی کی وجہ سے پیدا ہونے والے انسانی بحران کو مزید بڑھا دیا۔

اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے ترجمان نے بریفنگ میں کہا کہ افغانستان میں معاشی بحران کی وجہ موجودہ صورتحال خاص طور پر نہیں ہے بلکہ یہ “ایک ایسی چیز ہے جو امریکی فوجیوں کے انخلا سے پہلے بھی موجود تھی اور اس میں شدت آئی ہے۔”

انہوں نے مزید کہا کہ “ہم سمجھتے ہیں کہ افغانستان کی صورت حال پر فوری ردعمل کی ضرورت ہے، اب جب کہ سردیوں کے مہینے شروع ہو چکے ہیں اور ہمیں افغان عوام کی فلاح و بہبود کے بارے میں تشویش ہے۔”

انہوں نے کہا کہ افغانستان کے لیے امریکی نمائندہ خصوصی ٹام ویسٹ نے اسلام آباد میں اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے حالیہ اجلاس میں شرکت کی تھی جہاں افغان عوام کو مالی امداد فراہم کرنے کے لیے ایک ٹرسٹ فنڈ قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ اکیلے افغانستان کی مدد نہیں کر سکتا، انہوں نے مزید کہا کہ دوسرے ممالک کو بھی افغانستان کی مدد کے لیے آگے آنا چاہیے، خاص طور پر خطے کے وہ ممالک جو افغانستان کے قریب ہیں اور افغان عوام کے لیے بہت کچھ ہے۔ وہ کر سکتے ہیں اور کرنا چاہیے۔

ترجمان نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بات کرتے ہوئے کہا کہ خطے میں ایسے ممالک ہیں جن کے مفاد میں ایک مستحکم اور محفوظ افغانستان ہے اور وہ اسے ممکن بنانے کی بھرپور صلاحیت رکھتے ہیں۔

Most Popular

BISE Sukkur Grade 11 Annual Exams Date Sheet 2022

Sukkur, Board of Intermediate and Secondary Education Sukkur collected the admission forms from the students so that the students can be allowed...

BISE Benazirabad Grade 11 Annual Exams Date Sheet 2022

Benazirabad,Board of Intermediate and Secondary Education Shaheed Benazirabad collected the admission forms from the students to appear in SBA Board 11th class...

BISE Mirpur Khas 1st Year Annual Exams 2022 Date Sheet

Mirpur Khas, Board of Intermediate and Secondary Education Mirpur Khas received admission forms from the students to manage their BISE Mirpur Khas...

BISE Larkana Grade 11 Annual Exams Date Sheet 2022

Larkana, Board of Intermediate and Secondary Education Larkana started the process of Larkana Board 1st year annual exams 2022. The exams section...

Recent Comments