Home World South Korea has tested ballistic missiles

South Korea has tested ballistic missiles

جنوبی کوریا نے بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے

South Korea has tested ballistic missiles a few hours away to show off military assets.

South Korea’s presidential office has confirmed that it has tested its first underwater ballistic missile this afternoon.

It said the 3,000-tonne submarine was launched and the locally-made missile covered the distance before hitting the target.

The statement said the weapons would help South Korea deal with potential external threats, increase its defensive position and promote peace on the Korean Peninsula.

The South Korean military said Wednesday morning that the test was carried out after North Korea fired two short-range ballistic missiles.

Earlier on Monday, North Korea said it had tested a newly developed cruise missile in its first weapons test in six months.

Experts say North Korea’s experience shows that it is moving forward with its weapons-building plans while trying to put pressure on the United States to resume stalled nuclear talks.

Observers say South Korean President Moon Jae-in’s government, which is working to reconcile with North Korea, is responding to criticism that it has softened its stance on North Korea.

The South Korean military says a North Korean missile fired by North Korea covered a distance of about 800,800 kilometers (497 miles) before landing between the Korean Peninsula and Japan.

The U.S. Indo-Pacific Command said North Korea’s ballistic launches “do not pose an immediate threat to the United States or our allies in the region.”

Japan has condemned North Korea’s experiments, calling them a threat to peace and security in the region.

Japanese Prime Minister Yoshihide Suga said the launches were a threat to peace and security in Japan and the region and were highly provocative.

He said the Japanese government was ready for any emergency and was committed to increasing surveillance.

The Japanese Coast Guard said the missiles did not damage any aircraft or aircraft.

According to a report by the foreign news agency Reuters, analysts said that the missile could be the first weapon with nuclear capability in the country.

Pyongyang is continuing its weapons program, which has stalled after talks on easing US sanctions in exchange for ending its nuclear and ballistic missile programs.

جنوبی کوریا نے فوجی اثاثے ظاہر کرنے کے لیے چند گھنٹوں کے فاصلے پر بیلسٹک میزائلوں کا تجربہ کیا ہے۔

جنوبی کوریا کے صدارتی دفتر نے تصدیق کی ہے کہ اس نے آج سہ پہر اپنے پہلے زیر آب بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے۔

اس نے کہا کہ 3 ہزار ٹن وزنی آبدوز سے لانچ کیا گیا اور مقامی طور پر تیار کردہ میزائل نے ہدف کو نشانہ بنانے سے پہلے فاصلہ طے کیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ ہتھیار جنوبی کوریا کو ممکنہ بیرونی خطرات سے نمٹنے ، اپنی دفاعی پوزیشن بڑھانے اور جزیرہ نما کوریا میں امن کو فروغ دینے میں مدد دے گا۔

جنوبی کوریا کی فوج نے بدھ کی صبح کہا کہ یہ تجربہ شمالی کوریا کی جانب سے دو مختصر فاصلے کے بیلسٹک میزائل داغنے کے بعد کیا گیا۔

اس سے قبل پیر کو شمالی کوریا نے کہا تھا کہ اس نے چھ ماہ میں اپنے پہلے ہتھیاروں کے تجربے میں ایک نئے تیار کردہ کروز میزائل کا تجربہ کیا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کا تجربہ ظاہر کرتا ہے کہ وہ اپنے ہتھیاروں کی تعمیر کے منصوبوں کے ساتھ آگے بڑھ رہا ہے جبکہ امریکہ پر دباؤ ڈالنے کی کوشش کر رہا ہے کہ وہ رکے ہوئے جوہری مذاکرات کو دوبارہ شروع کرے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ جنوبی کوریا کے صدر مون جے ان کی حکومت ، جو شمالی کوریا کے ساتھ مفاہمت پر کام کر رہی ہے ، تنقید کا جواب دے رہی ہے کہ اس نے شمالی کوریا کے بارے میں اپنے موقف میں نرمی کی ہے۔

جنوبی کوریا کی فوج نے کہا کہ شمالی کوریا کی جانب سے داغے گئے شمالی کوریا کے میزائل نے جزیرہ نما کوریا اور جاپان کے درمیان اترنے سے پہلے تقریبا 800 800 کلومیٹر (497 میل) کا فاصلہ طے کیا۔

یو ایس انڈو پیسیفک کمانڈ نے کہا کہ شمالی کوریا کے بیلسٹک لانچوں سے “امریکہ یا خطے میں ہمارے اتحادیوں کے لیے فوری خطرہ نہیں ہے۔”

جاپان نے شمالی کوریا کے تجربات کی مذمت کرتے ہوئے اسے خطے میں امن اور سلامتی کے لیے خطرہ قرار دیا ہے۔

جاپانی وزیر اعظم یوشی ہائیڈے سوگا نے کہا کہ یہ لانچ جاپان اور خطے میں امن و سلامتی کے لیے خطرہ ہیں اور یہ انتہائی اشتعال انگیز ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جاپانی حکومت کسی بھی ہنگامی صورتحال کے لیے تیار ہے اور نگرانی بڑھانے کے لیے پرعزم ہے۔

جاپانی کوسٹ گارڈ نے کہا کہ میزائلوں سے کسی طیارے یا طیارے کو نقصان نہیں پہنچا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے روئٹرز کی رپورٹ کے مطابق تجزیہ کاروں کا کہنا تھا کہ میزائل ملک میں جوہری صلاحیت رکھنے والا پہلا ہتھیار ہو سکتا ہے۔

پیانگ یانگ اپنے ہتھیاروں کا پروگرام جاری رکھے ہوئے ہے ، جو اپنے جوہری اور بیلسٹک میزائل پروگراموں کو ختم کرنے کے بدلے میں امریکی پابندیوں میں نرمی کی بات چیت کے بعد رک گیا ہے۔ میں

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Schools will be reopen as soon as separate education arrangements for girls are completed: Taliban

لڑکیوں کے لیے علیحدہ تعلیمی انتظامات مکمل ہوتے ہی سکول دوبارہ کھل جائیں گے: طالبان Taliban spokesman Zabihullah...

The Chief Election Commissioner and the Opposition speak the same language: Fawad Chaudhry

چیف الیکشن کمشنر اور اپوزیشن ایک ہی زبان بولتے ہیں: فواد چوہدری Federal Information and Broadcasting Minister Fawad...

Govt will not consult with Shahbaz Sharif for NAB chairman appointment

چیئرمین نیب کی تقرری کے لیے حکومت شہباز شریف سے مشاورت نہیں کرے گی Although the non-extendable four-year...

Boxer Aamir Khan was stopped from flying by an American airline for not wearing a face mask

باکسر عامر خان کو فیس ماسک نہ پہننے پر امریکی ایئر لائن کی پروازسے روک دیا گیا۔ Boxer...

Recent Comments