Federal Budget of Rs 3,000 Billion Deficit Prepared

0
634
Federal Budget of Rs 3,000 Billion Deficit Prepared
Federal Budget of Rs 3,000 Billion Deficit Prepared

تین ہزار ارب روپے خسارے کا وفاقی بجٹ تیار

سات ہزار 570 ارب روپے کے وفاقی بجٹ کا مسودہ تیار کیا گیا ہے اور رواں ہفتے وفاقی کابینہ میں پیش کیا جائے گا ، جس کے بعد اسے 12 جون کو پارلیمنٹ میں پیش کیا جائے گا ، سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں 20 فیصد تک اضافے کا امکان ہے۔ زراعت اور توانائی کے منصوبوں کے لئے درآمدی مشینری پر کسٹم اور ایکسائز ڈیوٹی میں 3 فیصد تک کمی متوقع ہے۔

اسٹاک مارکیٹ ٹیکس میں بھی آسانی ہوگی۔ ٹیکس وصولی کا ہدف چار ہزار ارب روپے اور ترقیاتی بجٹ 530 ارب روپے رہنے کا امکان ہے۔ تعمیراتی صنعت کو خصوصی مراعات جبکہ سرکاری و شراکت کے تحت ترقیاتی منصوبوں کے لئے 200 ارب روپے سے زیادہ مختص کرنے کی تجویز ہے۔

بنیادی اشیائے خوردونوش پر ٹیکس میں کمی ، کورونا اور کاروباری سہولت سے نمٹنے کے لئے ایک ہزار ارب روپے مختص ، اسلام آباد میں لگژری مکانات اور جائیدادوں پر لگژری ٹیکس 1 لاکھ سے 2 لاکھ روپے تک لگانے کا امکان ہے۔

The federal budget of Rs 7,570 billion has been drafted and will be tabled in the federal cabinet this week, after which it will be tabled in Parliament on June 12, with a 20 per cent increase in salaries and pensions for government employees. Is likely. Customs and excise duties on imported machinery for agriculture and energy projects are expected to be reduced by up to 3%.

Stock market tax will also be eased. The tax collection target is likely to be Rs 4,000 billion and the development budget Rs 530 billion. It is proposed to provide special incentives to the construction industry while allocating more than Rs. 200 billion for development projects under government and partnership.

Tax reduction on basic food items, Rs 1,000 billion allocated to deal with corona and business convenience, luxury tax on luxury houses and properties in Islamabad is likely to be Rs 1 lakh to 2 lakh.