Home Pakistan Under Safety Measures, 12 Mills Are "Safe" From The Sugar Commission

Under Safety Measures, 12 Mills Are “Safe” From The Sugar Commission

حفاظتی انتظامات کے تحت شوگر کمیشن سے 12 ملیں “محفوظ” ہیں

شوگر کمیشن کے ذریعہ بارہ شوگر ملوں کی تفتیش نہیں کی جارہی ہے ، کیونکہ سپریم کورٹ نے 22 جون کو سندھ ہائیکورٹ کے فیصلے کو برقرار رکھتے ہوئے انہیں تحقیقات سے تحفظ فراہم کیا۔

دو رکنی بنچ نے سپریم کورٹ کے حکم کے خلاف وفاقی حکومت کی اپیل پر سماعت کی۔

اٹارنی جنرل خالد جاوید خان نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ تحقیقات کو روکنے کے لئے سپریم کورٹ کا کوئی دائرہ اختیار نہیں ہے۔ انہوں نے یہ بھی پوچھا کہ شوگر ملز کے مالکان 20 جون کو اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے کے بعد سندھ ہائیکورٹ کا رخ کیسے کرتے ہیں کہ کمیٹی کے ذریعہ تمام ملوں کی جانچ ہوگی۔

تاہم ، سپریم کورٹ نے اٹارنی جنرل کی درخواست مسترد کردی۔ کہا جاتا ہے کہ سپریم کورٹ کا دو رکنی بینچ اس کیس پر فیصلہ دینے سے قاصر ہے کیوں کہ یہ حکم سندھ ہائیکورٹ سے جج عمر سیال اور جج ذوالفقار علی سانگی پر مشتمل دو رُکنی بنچ نے جاری کیا تھا۔ 14 جولائی کو سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ کے ذریعہ اس کیس کو دوبارہ اٹھایا جائے گا۔

اٹارنی جنرل نے نوٹ کیا کہ 12 شوگر ملوں کو سندھ عدالت نے محفوظ کیا تھا ، لہذا اب بھی دیگر تمام ملوں سے تفتیش کی جاسکتی ہے۔ پاکستان میں کل 93 شوگر ملز ہیں۔

سماعت کے دوران عدالت نے پوچھا کہ کمیشن کی رپورٹ نے شوگر مل کے مالکان کو کس طرح متاثر کیا۔ “کیا آپ چاہیں گے کہ ہم اس رپورٹ کو کالعدم قرار دیں؟” ایک جج سے پوچھا۔ انہوں نے کہا کہ رپورٹ کے نتائج کو چھپایا نہیں جاسکتا ، اور تمام ریگولیٹرز اس معاملے میں کارروائی کریں گے۔

شوگر کی تفتیشی رپورٹ 21 مئی 2020 کو جاری کی گئی۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ کس طرح شوگر بیرنز نے کسانوں کو دھوکہ دیا ، سبسڈی سے فائدہ اٹھایا اور ایسے حالات پیدا کیے جن کے تحت چینی کی قیمتیں بڑھ سکتی ہیں۔ پی ٹی آئی کے جہانگیر ترین بھی ان لوگوں میں شامل تھے جن پر الزام لگایا گیا تھا کہ وہ اس بحران سے سب سے زیادہ فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق ، چھ اہم گروپ چینی کی مجموعی پیداوار میں 51 فیصد کو کنٹرول کرتے ہیں۔ ترین کی جے ڈی ڈبلیو مل کی کل پیداوار میں سب سے زیادہ حصہ 20 فیصد ہے۔

Twelve sugar mills are not being investigated by the Sugar Commission, as the Supreme Court upheld the Sindh High Court’s June 22 decision and protected them from investigation.

A two-member bench heard the federal government’s appeal against the Supreme Court order.

Attorney General Khalid Javed Khan argued that the Supreme Court had no jurisdiction to stop the investigation. He also asked how the owners of sugar mills turn to the Sindh High Court after the decision of the Islamabad High Court on June 20 that all the mills would be inspected by the committee.

However, the Supreme Court rejected the Attorney General’s request. A two-member bench of the Supreme Court is said to be unable to rule on the case as the order was passed by a two-member bench of the Sindh High Court comprising Justice Umar Sial and Justice Zulfiqar Ali Sangi. The case will be taken up again by a three-member bench of the Supreme Court on July 14.

The Attorney General noted that 12 sugar mills were protected by the Sindh court, so all other mills can still be investigated. There are a total of 93 sugar mills in Pakistan.

During the hearing, the court asked how the commission’s report affected the sugar mill owners. “Would you like us to annul this report?” Asked a judge. He said the findings of the report could not be withheld, and that all regulators would take action.

Sugar’s investigation report was released on May 21, 2020. He revealed how Sugar Barons cheated farmers, took advantage of subsidies and created conditions under which sugar prices could rise. PTI’s Jahangir Tareen was also among those accused of benefiting the most from the crisis. According to the report, six major groups control 51% of total sugar production. Tareen’s JDW Mill has the largest share in total production at 20%.

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Two Educational Institutions In Islamabad Sealed After Corona Virus Cases

کورونا وائرس کیسز کے بعد اسلام آباد میں دو تعلیمی اداروں کو سیل کردیا گیا On Friday, two...

Federal Ministers Expressed Outrage At ECP’s Response

وفاقی وزراء نے ای سی پی کے ردعمل پر برہمی کا اظہار کیا After the Election Commission of...

WhatsApp Introduces Voice And Video Calling Features For Desktop Users

واٹس ایپ نے ڈیسک ٹاپ صارفین کے لئے وائس اور ویڈیو کالنگ فیچر متعارف کرایا WhatsApp's desktop app...

Ayesha Omer Expresses On Khalil Ur Rehman Qamar’s Controversy

عائشہ عمر نے خلیل الرحمن قمر کے تنازعہ پر اظہار خیال کیا Pakistan's talented and beautiful actress Ayesha...

Recent Comments