Home World UN Security Council Extends the UN mission in Afghanistan

UN Security Council Extends the UN mission in Afghanistan

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے افغانستان میں اقوام متحدہ کے مشن میں توسیع کردی

The UN Security Council has extended the UN mission in Afghanistan by six months and called on the Taliban to form a comprehensive government.

According to AFP, the 15-member council passed a resolution approving the political mission of the United Nations Assistance Mission in Afghanistan (UNAMA), which deals with development rather than peace.

The resolution emphasized the importance of establishing a comprehensive and representative government, even though the new rulers of Afghanistan have created a government that includes only Taliban members and does not include women.

The resolution called for the full, equal and meaningful participation of women and the provision of human rights for all, including women, children and minorities.

The proposal was drafted by Estonia and Norway and welcomed its unanimous approval.

In August, the council passed a resolution calling on the Taliban to allow freedom of movement for Afghans seeking to leave the country, with the Taliban away from Russia and China.

The accepted text on Friday said the United Nations will continue to play an important role in promoting peace and stability in Afghanistan.

Diplomats said the Taliban had no objection to the renewal of the UN mandate.

An Afghan expert at the UN said the Taliban were committed to being more resilient.

He said he was more pragmatic than his predecessors in the 1990s, where the Taliban had been very strict in enforcing Islamic law in the past.

“The Taliban need the United Nations and that is good for us,” the Afghanistan expert told AFP.

The Council asked Secretary-General Antonio Guterres to report on the situation in Afghanistan every other month until the mandate expires in March 2022, and to submit a written report on the mission’s future by 31 January.

In recent weeks, several NGOs such as Amnesty International and Human Rights Watch have pressured the United Nations and its more than 2,000 employees in Afghanistan to report human rights abuses.

UN Human Rights Watch director Luis Charbonneau welcomed the expansion of the mission, saying the Taliban found little evidence of compliance with international human rights law, particularly the rights of women and girls.

He added that UNAMA needs to regularly and publicly report abuse to help meet the humanitarian needs of the Afghan people.

اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے افغانستان میں اقوام متحدہ کے مشن میں چھ ماہ کی توسیع کی ہے اور طالبان سے ایک جامع حکومت بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔

اے ایف پی کے مطابق 15 رکنی کونسل نے افغانستان میں اقوام متحدہ کے امدادی مشن (یوناما) کے سیاسی مشن کی منظوری کی ایک قرارداد منظور کی جو امن کے بجائے ترقی سے متعلق ہے۔

قرارداد میں ایک جامع اور نمائندہ حکومت کے قیام کی اہمیت پر زور دیا گیا حالانکہ افغانستان کے نئے حکمرانوں نے ایک ایسی حکومت بنائی ہے جس میں صرف طالبان کے ارکان شامل ہیں اور ان میں خواتین شامل نہیں ہیں۔

قرارداد میں خواتین کی مکمل ، مساوی اور بامعنی شرکت اور خواتین ، بچوں اور اقلیتوں سمیت سب کے لیے انسانی حقوق کی فراہمی پر زور دیا گیا۔

یہ تجویز ایسٹونیا اور ناروے نے تیار کی تھی اور اس کی متفقہ منظوری کا خیر مقدم کیا۔

اگست میں ، کونسل نے ایک قرارداد منظور کی جس میں طالبان سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ افغانیوں کو نقل و حرکت کی اجازت دیں جو ملک چھوڑنے کے خواہاں ہیں ، طالبان روس اور چین سے دور ہیں۔

جمعہ کو منظور شدہ متن میں کہا گیا کہ اقوام متحدہ افغانستان میں امن اور استحکام کے فروغ میں اہم کردار ادا کرتا رہے گا۔

سفارت کاروں نے کہا کہ طالبان کو اقوام متحدہ کے مینڈیٹ کی تجدید پر کوئی اعتراض نہیں ہے۔

اقوام متحدہ میں ایک افغان ماہر نے کہا کہ طالبان زیادہ لچکدار ہونے کے لیے پرعزم ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ 1990 کی دہائی میں اپنے پیشروؤں سے زیادہ عملی تھے ، جہاں طالبان ماضی میں اسلامی قانون کے نفاذ میں بہت سخت تھے۔

افغانستان کے ماہر نے اے ایف پی کو بتایا ، “طالبان کو اقوام متحدہ کی ضرورت ہے اور یہ ہمارے لیے اچھا ہے۔”

کونسل نے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریس سے کہا کہ وہ مارچ 2022 میں مینڈیٹ ختم ہونے تک ہر دوسرے مہینے افغانستان کی صورتحال کے بارے میں رپورٹ کریں اور 31 جنوری تک مشن کے مستقبل کے بارے میں تحریری رپورٹ پیش کریں۔

حالیہ ہفتوں میں ، کئی این جی اوز جیسے ایمنسٹی انٹرنیشنل اور ہیومن رائٹس واچ نے اقوام متحدہ اور افغانستان میں اس کے 2 ہزار سے زائد ملازمین پر دباؤ ڈالا ہے کہ وہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی اطلاع دیں۔

اقوام متحدہ کے ہیومن رائٹس واچ کے ڈائریکٹر لوئس چاربنو نے مشن کی توسیع کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ طالبان کو انسانی حقوق کے بین الاقوامی قانون بالخصوص خواتین اور لڑکیوں کے حقوق کی تعمیل کے بہت کم ثبوت ملے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ یوناما کو افغان عوام کی انسانی ضروریات کو پورا کرنے میں مدد کے لیے باقاعدگی سے اور عوامی طور پر غلط استعمال کی اطلاع دینے کی ضرورت ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Nationwide protests against inflation

مہنگائی کے خلاف ملک گیر مظاہرے The Pakistan Democratic Movement (PDM), an alliance of opposition parties, and the...

The rivalry between Pakistan and India is incomparable: Matthew Hayden

پاکستان اور بھارت کی دشمنی بے مثال ہے: میتھیو ہیڈن Matthew Hayden said that rivalry between Pakistan and...

Salman Butt Scores most runs in single T20 World Cup.

سلمان بٹ نے سنگل ٹی 20 ورلڈ کپ میں سب سے زیادہ رنز بنائے The Super 12 leg...

You Should leave Pakistan: CM Sind Burst on PM

آپ پاکستان چھوڑ دیں: وزیراعلیٰ سندھ وزیراعظم پر پھٹ پڑے Reacting to the rising prices on PTI, Sindh...

Recent Comments