Wednesday, September 23, 2020
Home Tech Tik Tok denied US allegations of links to the Chinese government

Tik Tok denied US allegations of links to the Chinese government

ٹک ٹوک نے چینی حکومت سے تعلقات کے امریکی الزامات کی تردید کردی

چینی ویڈیو شیئرنگ ایپ ٹک ٹوک نے چینی حکومت سے تعلق رکھنے والی افواہوں کی تردید کی ہے جو امریکی الزامات کو “افواہیں اور غلط معلومات” قرار دیتے ہیں۔

ٹک ٹوک نے ایک آن لائن انفارمیشن ہب کا آغاز کیا کیونکہ اس کی چینی والدین کی کمپنی کو صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ریاستہائے متحدہ میں اس ایپ پر پابندی عائد ہونے سے قبل ٹک ٹوک کو برطرف کرنے کے لئے مقرر کردہ ڈیڈ لائن کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

“انٹرنیٹ کا آخری سنی کارنر” کے عنوان سے ایک ویب صفحے پر ، ٹِک ٹِک نے برقرار رکھا کہ وہ پلیٹ فارم کے بارے میں سیدھا ریکارڈ قائم کررہا ہے۔

کمپنی نے پوسٹ میں کہا ، “ٹِک ٹِک نے کبھی بھی امریکی صارف کا ڈیٹا چینی حکومت کو فراہم نہیں کیا ، اور نہ ہی اگر پوچھا گیا تو وہ ایسا کرے گا۔”

“اس کے برخلاف کوئی بھی جواز بے بنیاد اور سراسر غلط ہے۔”

ٹک ٹوک کے مطابق ، سنگاپور میں بیک اپ کے ساتھ امریکی صارف کا ڈیٹا یہاں محفوظ ہے۔

چین میں قائم بائٹ ڈانس کی ملکیت والی اس کمپنی نے اصل وقت میں مسائل کو حل کرنے کے لئے نیا ٹویٹر اکاؤنٹ بھی لانچ کیا۔

ٹرمپ نے دعوی کیا ہے کہ ٹِک ٹُک کا استعمال چین کے ذریعہ وفاقی ملازمین کی جگہوں کا سراغ لگانے اور کارپوریٹ جاسوسی کے لئے کیا جاسکتا ہے۔

Chinese video-sharing app TikTok has denied rumors about the Chinese government calling the US allegations “rumors and misinformation.”

TikTok has launched an online information hub as its Chinese parent company faces a deadline set by President Donald Trump to fire Tik Tok before the app is banned in the United States. ۔

On a web page titled “Internet’s Last Sunny Corner”, Tick Tick maintained that he was setting a straightforward record about the platform.

The company said in a post that “Tick Tick has never provided US user data to the Chinese government, nor will it do so if asked.”

“Any justification for this is baseless and utterly wrong.”

According to TikTok, US user data is safe here with backups in Singapore.

The Chinese-based Bite Dance-owned company also launched a new Twitter account to solve problems in real time.

Trump has claimed that TikTok could be used by China to track the whereabouts of federal employees and corporate espionage.

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Capital Live with Aniqa 22nd September 2020

Capital Live with Aniqa live telecasted today at Capital Tv can be watched here online with ease. Today's Capital Live with Aniqa...

Ho Kya Raha Hai 22nd September 2020

Ho Kya Raha Hai live telecasted today at 92 News HD Plus can be watched here online with ease. Today's Ho Kya...

Tonight with Fereeha 22nd September 2020

Tonight with Fereeha live telecasted today at Abb Tak News can be watched here online with ease. Today's Tonight with Fereeha show...

To The Point 22nd September 2020

To The Point live telecasted today at Express News can be watched here online with ease. Today's To The Point show topic...

Recent Comments