Home World Qatar advises Western world not to isolate Taliban

Qatar advises Western world not to isolate Taliban

قطر نے مغربی دنیا کو مشورہ دیا ہے کہ وہ طالبان کو تنہا نہ کرے

Qatar’s foreign minister has said isolating Afghanistan and its new Taliban rulers is not an answer or an argument, but that contacting former insurgents will strengthen their moderate voices.

According to the report, Sheikh Muhammad bin Abdul Rahman Al Thani said this during a diplomatic meeting in Qatar where the Taliban has established a political office for years.

The world is watching how the Taliban moved to power after two decades of insurgency and war when they took control of the country after the withdrawal of US and NATO forces.

This week, representatives of the United States, 10 European nations and the European Union held talks with Taliban leaders in Doha.

The Qatari foreign minister told an audience of anti-terrorism specialists in Doha that Qatar believes the international community should urge and encourage the Taliban to take appropriate action, rather than punishing them for negative actions. Let’s talk about giving.

“We believe it is important to guide them, it will motivate them to grow and move forward, it will help moderate forces (voices) to be more influential and more effective in their government,” he added. Will

US State Department spokesman Ned Price said in a statement that the United States had made it clear in talks with the Taliban that the group would be tested by its efforts to fight terrorism and protect human rights.

“As in recent weeks, we approached the Taliban on the basis of pragmatism and realism, focusing on security and terrorism concerns,” he told reporters.

Both the Taliban and the United States are concerned about the presence of ISIS in Afghanistan, but the Taliban have ruled out cooperation with the United States in the fight against ISIS.

On the other hand, Afghanistan, which relies heavily on foreign aid, faces extreme poverty, its financial system is crumbling and millions are starving.

The Taliban have difficulty paying salaries to teachers, doctors and about 500,000 civil servants, food prices have risen in the country and imports of medicines have become difficult because it is blocked from the global financial system.

“Loneliness will never be the answer, it is important to liaise with whoever is ruling Afghanistan, because leaving Afghanistan would be a big mistake,” Abdul Rahman al-Thani told the Global Security Forum in Doha.

قطر کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ افغانستان اور اس کے نئے طالبان حکمرانوں کو الگ تھلگ کرنا کوئی جواب یا دلیل نہیں ہے ، بلکہ یہ کہ سابق باغیوں سے رابطہ ان کی اعتدال پسند آوازوں کو مضبوط کرے گا۔

رپورٹ کے مطابق شیخ محمد بن عبدالرحمن آل ثانی نے یہ بات قطر میں سفارتی اجلاس کے دوران کہی جہاں طالبان نے برسوں سے سیاسی دفتر قائم کیا ہے۔

دنیا دیکھ رہی ہے کہ طالبان دو دہائیوں کی شورش اور جنگ کے بعد کیسے اقتدار میں آئے جب انہوں نے امریکی اور نیٹو افواج کے انخلا کے بعد ملک کا کنٹرول سنبھال لیا۔

رواں ہفتے امریکہ ، 10 یورپی ممالک اور یورپی یونین کے نمائندوں نے دوحہ میں طالبان رہنماؤں سے مذاکرات کیے۔

قطری وزیر خارجہ نے دوحہ میں انسداد دہشت گردی کے ماہرین کے سامعین سے کہا کہ قطر کا خیال ہے کہ بین الاقوامی برادری کو چاہیے کہ وہ طالبان کو منفی کارروائیوں کی سزا دینے کے بجائے مناسب کارروائی کرنے کی ترغیب دے اور ان کی حوصلہ افزائی کرے۔ آئیے دینے کی بات کرتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا ، “ہم سمجھتے ہیں کہ ان کی رہنمائی کرنا ضروری ہے ، یہ انہیں بڑھنے اور آگے بڑھنے کی ترغیب دے گا ، اس سے اعتدال پسند قوتوں (آوازوں) کو ان کی حکومت میں زیادہ بااثر اور زیادہ موثر ہونے میں مدد ملے گی۔” مرضی

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے ایک بیان میں کہا کہ امریکہ نے طالبان کے ساتھ مذاکرات میں واضح کیا تھا کہ اس گروہ کو دہشت گردی سے لڑنے اور انسانی حقوق کے تحفظ کی کوششوں سے آزمایا جائے گا۔

انہوں نے نامہ نگاروں کو بتایا ، “حالیہ ہفتوں کی طرح ، ہم نے سیکورٹی اور دہشت گردی کے خدشات پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے عملیت پسندی اور حقیقت پسندی کی بنیاد پر طالبان سے رابطہ کیا۔”

طالبان اور امریکہ دونوں افغانستان میں داعش کی موجودگی پر تشویش کا شکار ہیں ، تاہم طالبان نے داعش کے خلاف جنگ میں امریکہ کے ساتھ تعاون کو مسترد کر دیا ہے۔

دوسری طرف ، افغانستان ، جو غیر ملکی امداد پر بہت زیادہ انحصار کرتا ہے ، کو انتہائی غربت کا سامنا ہے ، اس کا مالی نظام تباہ ہو رہا ہے اور لاکھوں لوگ بھوک سے مر رہے ہیں۔

طالبان کو اساتذہ ، ڈاکٹروں اور تقریبا 500 پانچ لاکھ سرکاری ملازمین کو تنخواہیں دینے میں دشواری ہے ، ملک میں خوراک کی قیمتیں بڑھ گئی ہیں اور ادویات کی درآمد مشکل ہو گئی ہے کیونکہ یہ عالمی مالیاتی نظام سے مسدود ہے۔

عبدالرحمان الثانی نے دوحہ میں گلوبل سیکورٹی فورم کو بتایا ، “تنہائی کبھی بھی جواب نہیں ہوگی ، جو بھی افغانستان پر حکومت کر رہا ہے اس کے ساتھ رابطہ قائم کرنا ضروری ہے ، کیونکہ افغانستان چھوڑنا بہت بڑی غلطی ہوگی۔”

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

FATF decides to keep Pakistan on gray list

ایف اے ٹی ایف کا پاکستان کو گرے لسٹ میں رکھنے کا فیصلہ The Financial Action Task Force...

Sri Lanka Reached Super 12 defeating Ireland in T20 World Cup

سری لنکا نے ٹی 20 ورلڈ کپ میں آئرلینڈ کو شکست دے کر سپر 12 تک رسائی حاصل کرلی

Senate committee summoned the Finance Adviser and the Governor SBP on inflation

سینیٹ کمیٹی نے مہنگائی پر مشیر خزانہ اور گورنر اسٹیٹ بینک کو طلب کر لیا Taking note of...

Rupee hits new low against US dollar

امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپیہ تاریخ کی نئی گراوٹ ریکارڈ The Pakistani rupee hit a new record...

Recent Comments