Home World Palestinians rejected the offer to delay their eviction from Jerusalem

Palestinians rejected the offer to delay their eviction from Jerusalem

فلسطینیوں نے یروشلم سے ان کی بےدخلی میں تاخیر کی پیشکش کو مسترد کردیا

Palestinian families have rejected an offer by Jewish settlers to delay their deportation from Jerusalem.

According to the report, four families in the Sheikh Jarrah area of ​​Jerusalem say their decision depends on their justice and their faith in their homes and homeland.

He said that instead of giving in to an unfair deal, he would take to the Palestinian streets to raise international awareness of their plight.

According to Israeli rights group Ar-Amim, which closely follows developments in the city, a proposal presented by Israel’s Supreme Court last month would have made them safer tenants, allowing them to stay for at least the next 15 years. . Therefore, any eviction and demolition orders would be stopped.

The agreement would allow the families to continue arguing their case in Israeli courts, but would at least temporarily force them to verify ownership of the settlers ‘property, which could weaken the families’ case. The settlers had to pay a rent.

The four families are among dozens of families in Jerusalem at risk of eviction by Jewish settler organizations.

The settlers are using an Israeli law that allows them to claim property that was owned by Jews before the 1948 war.

Palestinians who have lost homes, property and land in the same conflict have no right to return.

There was no immediate comment from the settlers, but Jerusalem’s Deputy Mayor Arech King, a Jewish extremist, said he had accepted the offer.

The family, originally from Israel, say the Jordanian government gave them land in 1948 after taking control of the West Bank and East Jerusalem, which they later exchanged for refugee status. The houses were built and have been living there ever since.

Israel has presented the problem as a private real estate dispute, but Palestinian and human rights groups see it as a concerted effort to expel Palestinians from Jerusalem and change the identity of the city.

فلسطینی خاندانوں نے یہودی آباد کاروں کی جانب سے یروشلم سے ان کی ملک بدری میں تاخیر کی پیشکش کو مسترد کر دیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق یروشلم کے علاقے شیخ جراح کے چار خاندانوں کا کہنا ہے کہ ان کے فیصلے کا انحصار ان کے انصاف اور ان کے گھروں اور وطن پر ایمان پر ہے۔

انہوں نے کہا کہ غیر منصفانہ معاہدے سے دستبردار ہونے کے بجائے وہ فلسطینیوں کی حالت زار کے بارے میں بین الاقوامی سطح پر شعور اجاگر کرنے کے لیے سڑکوں پر نکلیں گے۔

اسرائیلی حقوق کے گروپ ار-امیم کے مطابق، جو شہر میں ہونے والی پیش رفت کو قریب سے دیکھتا ہے، اسرائیل کی سپریم کورٹ کی طرف سے گزشتہ ماہ پیش کی گئی ایک تجویز کے تحت انہیں زیادہ محفوظ کرایہ دار بنا دیا جاتا، جس سے انہیں کم از کم اگلے 15 سال تک رہنے کی اجازت مل جاتی۔ . لہذا، کسی بھی بے دخلی اور مسماری کے احکامات کو روک دیا جائے گا۔

یہ معاہدہ خاندانوں کو اسرائیلی عدالتوں میں اپنے کیس کی بحث جاری رکھنے کی اجازت دے گا، لیکن کم از کم عارضی طور پر انہیں آباد کاروں کی جائیداد کی ملکیت کی تصدیق کرنے پر مجبور کرے گا، جس سے خاندانوں کا مقدمہ کمزور ہو سکتا ہے۔ آباد کاروں کو کرایہ ادا کرنا پڑا۔

یہ چار خاندان یروشلم کے درجنوں خاندانوں میں شامل ہیں جنہیں یہودی آباد کار تنظیموں کی طرف سے بے دخلی کا خطرہ ہے۔

آباد کار ایک اسرائیلی قانون کا استعمال کر رہے ہیں جس کے تحت وہ 1948 کی جنگ سے پہلے یہودیوں کی ملکیت والی جائیداد کا دعویٰ کرنے کی اجازت دیتا ہے۔

اسی تنازعہ میں گھر، جائیداد اور زمین کھونے والے فلسطینیوں کو واپسی کا کوئی حق نہیں ہے۔

آباد کاروں کی طرف سے فوری طور پر کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا، لیکن یروشلم کے ڈپٹی میئر آریک کنگ، جو ایک یہودی انتہا پسند ہیں، نے کہا کہ انہوں نے یہ پیشکش قبول کر لی ہے۔

یہ خاندان، جو کہ اصل میں اسرائیل سے ہے، کا کہنا ہے کہ اردن کی حکومت نے انہیں 1948 میں مغربی کنارے اور مشرقی یروشلم کا کنٹرول سنبھالنے کے بعد زمین دی تھی، جسے بعد میں انہوں نے پناہ گزینوں کی حیثیت سے تبدیل کر دیا تھا۔ گھر بنائے گئے اور تب سے وہیں رہ رہے ہیں۔

اسرائیل نے اس مسئلے کو ایک پرائیویٹ ریئل اسٹیٹ تنازعہ کے طور پر پیش کیا ہے، لیکن فلسطینی اور انسانی حقوق کے گروپ اسے فلسطینیوں کو یروشلم سے بے دخل کرنے اور شہر کی شناخت کو تبدیل کرنے کی ایک مشترکہ کوشش کے طور پر دیکھتے ہیں۔

Most Popular

Sindh Emergency Rescue 1122 Jobs 2022 PTS Application Form

Sindh Emergency Rescue Service 1122 is seeking applications from experienced and energetic candidates for Rescue 1122 Sindh Jobs 2022 against the vacant...

200 Rs Prize Bond Draw List 90 Multan Result 2022

Multan, As per the Prize Bond Schedule 2022 issued by the National Savings of Pakistan, The 90th draw of Rs 200 Prize Bond List 2022 is held...

25000 Rs Premium Prize Bond List 10 June 2022 Hyderabad

Hyderabad, 25000 Rs Premium Prize Bond Draw List 6 winners 2022 has announced at Hyderabad on 10 June, 2022, this is the 25000 Rs...

40000 Rs Premium Prize Bond List 21 10 June 2022 Muzaffarabad Winner List

Muzaffarabad, 40000 Rs Premium Prize Bond Draw winners 2022 has announced at Muzaffarabad on June 10, 2022, this is the 40000 Rs Premium Prize...

Recent Comments