Home Health Number of female doctors in Punjab has come down drastically during the...

Number of female doctors in Punjab has come down drastically during the PTI regime

پی ٹی آئی کے دور حکومت میں پنجاب میں خواتین ڈاکٹروں کی تعداد میں نمایاں کمی آئی ہے

Despite an increase in primary health units (BHUs), Rural Health Centers (RHCs) and Establishment Centers (SCs) across the province, between 2018 and 2020, when the PTI took power, the number of female doctors in Punjab declined significantly. ۔

According to the 4th Punjab Gender Parity Report 2019-20, the number of Lady Health Workers (LHWs) working in the province in 2018 was 44,103 which decreased to 42,784 in 2020, recording a decrease of 2.9% in two years. Gone

In 2018, there were 1,788 Lady Health Supervisors (LHSs) serving in the province. In 2020, their number dropped to 1,706, down 4.6 percent in two years.

The number of female medical officers (WMOs) working in the province in 2018 was 156, which dropped to 43 in 2020, representing a sharp decline of 72% over the same period.

Note that the Integrated Reproductive Maternal, Neonatal and Child Health (IRMNCH) Directorate provided data for the 4th Punjab Gender Equality Report 2019-20.

Referring to the report, Tariq Khan, Secretary, Punjab Commission on Status of Women (PCSW), expressed concern over the recently published report.

The Secretary PCSW has also written a letter to the IRMNCH Directorate, requesting the department to propose immediate steps to increase the number of female doctors in the province.

صوبے بھر میں بنیادی صحت یونٹس ، رورل ہیلتھ سینٹرز اور اسٹیبلائزیشن سینٹرز میں اضافے کے باوجود، 2018 اور 2020 کے درمیان، جب پی ٹی آئی نے اقتدار سنبھالا، پنجاب میں خواتین ڈاکٹروں کی تعداد میں نمایاں کمی واقع ہوئی۔

چوتھی پنجاب جینڈر پیریٹی رپورٹ 2019-20 کے مطابق، 2018 میں صوبے میں کام کرنے والی لیڈی ہیلتھ ورکرز کی تعداد 44,103 تھی جو 2020 میں کم ہو کر 42,784 رہ گئی، جس میں دو سالوں کے دوران 2.9 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔

2018 میں صوبے میں 1,788 لیڈی ہیلتھ سپروائزرز خدمات انجام دے رہی تھیں۔ 2020 میں ان کی تعداد کم ہو کر 1,706 ہو گئی، جس میں دو سالوں میں 4.6 فیصد کمی دیکھی گئی۔

صوبے میں 2018 میں کام کرنے والی خواتین میڈیکل آفیسرز کی تعداد 156 تھی جو 2020 میں کم ہو کر 43 رہ گئی، جو کہ اسی عرصے میں 72 فیصد کی بڑی کمی کو ظاہر کرتی ہے۔

نوٹ کریں کہ انٹیگریٹڈ ری پروڈکٹو میٹرنل، نوزائیدہ اور بچے کی صحت ڈائریکٹوریٹ نے چوتھی پنجاب صنفی برابری رپورٹ 2019-20 کے لیے ڈیٹا فراہم کیا۔

رپورٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے پنجاب کمیشن آن سٹیٹس آف ویمن (پی سی ایس ڈبلیو) کے سیکرٹری طارق خان نے حال ہی میں شائع ہونے والی رپورٹ پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

سیکرٹری پی سی ایس ڈبلیو نے انٹیگریٹڈ ری پروڈکٹو میٹرنل، نوزائیدہ اور بچے کی صحت ڈائریکٹوریٹ کو بھی ایک خط لکھا ہے، جس میں محکمہ سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ صوبے میں خواتین ڈاکٹروں کی تعداد بڑھانے کے لیے فوری اقدامات تجویز کرے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Alia Bhatt made her fan cry

عالیہ بھٹ نے اپنے مداح کو رلا دیا Bollywood star Alia Bhatt recognized her fan even after 7...

Most watched match of Pak-India World Cup T20

پاک بھارت ورلڈ کپ ٹی20 کا سب سے زیادہ دیکھا جانے والا میچ The International Cricket Council (ICC)...

Taliban-U.S talks will resume in in Doha, Qatar

قطر کے دارالحکومت دوحہ میں طالبان امریکہ مذاکرات دوبارہ شروع ہوں گے Zabihullah Mujahid, a spokesman for the...

Dollar reached a record high of Rs 179

ڈالر 179 روپے کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا The dollar continued to soar, reaching a high...

Recent Comments