Saturday, September 19, 2020
Home Tech Apple, Google Update Tech Coronavirus contact tracking before launch

Apple, Google Update Tech Coronavirus contact tracking before launch

Apple Inc and Alphabet Inc Google today updated the technical details of the Coronavirus contact tracking program scheduled to launch next month. New features will improve privacy security and provide more accurate information to health authorities. The program, announced on April 10, would use Bluetooth technology to enable government agencies to create apps to warn people close to those who have tested the novel corona virus.

The numbers that identify users are randomly generated, and so-called “metadata” such as Bluetooth signal strength and phone models for users are now encrypted along with the primary data about who they were close to. The companies have tried to address health professionals’ concerns about the ineffectiveness of the program. Because Bluetooth signals penetrate some walls and can also be identified briefly and quietly, researchers are concerned about false alarms in residential buildings or passers-by in public spaces.

Apple and Google also have data on Bluetooth power rates that can be used to determine how close and how long two phones are together, so that the authorities can set their own thresholds to notify people when.

ایپل، گوگل نے کرونا وائرس کنٹیکٹ ٹریسنگ کے آغاز سے پہلے اس کے بارے میں آگاہ کیا

ایپل انک اور الفبیٹ انک گوگل نے آج اگلے مہینے سے لانچ ہونے والے کورونا وائرس رابطہ سے باخبر رہنے والے پروگرام کی تکنیکی تفصیلات کو اپ ڈیٹ کیا۔ نئی خصوصیات نجی معلومات کی حفاظتی نظام کو بہتر بنائیں گی اور صحت کے حکام کو زیادہ درست معلومات فراہم کریں گی۔ 10 اپریل کو اعلان کیا گیا یہ پروگرام ، بلوٹوتھ ٹکنالوجی کا استعمال حکومتی ایجنسیوں کو ایپس تیار کرنے کے قابل بنائے گا تاکہ وہ ناول کورونا وائرس کا تجربہ کرنے والے قریبی لوگوں کو متنبہ کرسکیں۔

وہ نمبر جو صارفین کی شناخت کرتے ہیں وہ تصادفی طور پر تیار کیے جاتے ہیں ، اور “میٹا ڈیٹا” جیسے بلوٹوتھ سگنل کی طاقت اور صارفین کے لئے فون کے ماڈلز کو اب ان کو اس بات کے بارے میں بنیادی ڈیٹا کے ساتھ بھی خفیہ بنایا گیا ہے کہ وہ کس کے قریب تھے۔ کمپنیوں نے صحت کے پیشہ ور افراد کے پروگرام کے بے اثر ہونے سے متعلق خدشات کو دور کرنے کی کوشش کی ہے۔ چونکہ بلوٹوتھ سگنل کچھ دیواروں میں گھس جاتا ہے اور مختصر اور خاموشی سے اس کی شناخت بھی کی جا سکتی ہے ، محققین رہائشی عمارتوں یا عوامی جگہوں میں راہگیروں کے جھوٹے الارم کے بارے میں فکر مند ہیں۔

ایپل اور گوگل کے پاس بلوٹوتھ پاور ریٹس کے بارے میں بھی اعداد و شمار موجود ہیں جن کا استعمال اس بات کے لیے کیا جاسکتا ہے کہ دو فون کتنے قریب اور کتنے بڑے لمحے ہیں ، تاکہ حکام لوگوں کو مطلع کرنے کیلئے اپنی دہلیز مقرر کرسکیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Ab Pata Chala 18th September 2020

Ab Pata Chala live telecasted today at Bol News can be watched here online with ease. Today's Ab Pata Chala show topic...

92 At 8 18th September 2020

92 At 8 live telecasted today at 92 News HD Plus can be watched here online with ease. Today's 92 At 8...

Rubaroo 18th September 2020

Rubaroo live telecasted today at Aaj News can be watched here online with ease. Today's Rubaroo show topic is Nawaz Sharif's Warrants,...

Breaking Point with Malick 18th September 2020

Breaking Point with Malick live telecasted today at HUM News can be watched here online with ease. Today's Breaking Point with Malick...

Recent Comments