Home Business SECP Amendment Bill 2020 Passed In National Assembly

SECP Amendment Bill 2020 Passed In National Assembly

ایس ای سی پی ترمیمی بل 2020 قومی اسمبلی میں منظور

The Standing Committee on Finance, Revenue and Economic Affairs of the National Assembly on Wednesday passed the “Pakistan Security Exchange Commission (Amendment) Bill, 2020” with certain amendments after a thorough discussion on each of its provisions.

The 63rd meeting of the committee was held in the Parliament House under the chairmanship of Mr. Faizulla.

The committee debated the Bill, clause by clause, and after detailed discussion approved it unanimously with some amendments. However, due to paucity of time it delayed other legislative agenda.

During the meeting, Dr. Muhammad Ashfaq Ahmed, Chairman, Federal Board of Revenue (FBR) briefed the Committee on the overall performance of FBR, especially with respect to refunds on both Income Tax and Sales Tax since 2008. He explained the trend of revenue collection. , which confirmed an increase in revenue collection, especially during the months of July and August 2021. It was around Rs 323.8 billion.

Chairman FBR informed the committee that refund of sales tax is pending till 22nd September, 2021 due to difference in tariff. He was of the view that there is a need to review the tariff differential policy.

He stressed the need for significant investment in infrastructure development, IT sector in the wake of the recent cyber attack on FBR. He also emphasized that it is necessary to consider the policy regarding pending income and sales tax refunds before the tax year 2020 which should be liquidated through Joti SG.

Committee members expressed their views on the significant increase in revenue collection by FBR. He said the increase in revenue was due to increase in the price of imports, which was not a positive sign in terms of expansion of the tax net.

The meeting was attended by Dr. Ayesha Ghaus Pasha, Syed Naveed Qamar, Mr. Ali Parvez, Dr. Nafisa Shah, Mr. Amjad Ali Khan, Chaudhary Khalid Javed, Mr. Sadaqat Ali Khan Abbasi, Makhdoom Syed Samiul Hasan Gilani. , Mr. Faheem Khan, Mr. Kaiser Ahmed Sheikh and Syed Hussain Tariq, as well as senior officials from the Ministry of Finance, FBR, Housing and Construction, State Bank of Pakistan, Accountant General, Ministry of Law and Justice, and the SECP meeting. Chairman Audit Oversight Board and other stakeholders were also present.

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ ، محصول اور اقتصادی امور نے بدھ کو “پاکستان سیکورٹی ایکسچینج کمیشن (ترمیمی) بل ، 2020” کو اس کی ہر دفعات پر مکمل بحث کے بعد بعض ترامیم کے ساتھ منظور کیا۔

کمیٹی کا 63 واں اجلاس جناب فیض اللہ کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا۔

کمیٹی نے بل پر بحث کی ، شق بہ شق ، اور تفصیلی بحث کے بعد متفقہ طور پر کچھ ترامیم کی منظوری دی۔ تاہم ، وقت کی کمی کی وجہ سے اس نے دیگر قانون ساز ایجنڈے میں تاخیر کی۔

میٹنگ کے دوران ، ڈاکٹر محمد اشفاق احمد ، چیئرمین ، فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے کمیٹی کو ایف بی آر کی مجموعی کارکردگی سے آگاہ کیا ، خاص طور پر 2008 کے بعد انکم ٹیکس اور سیلز ٹیکس دونوں پر ریفنڈز کے حوالے سے۔ انہوں نے آمدنی کے رجحان کی وضاحت کی۔ مجموعہ ، جس نے ریونیو کلیکشن میں اضافے کی تصدیق کی ، خاص طور پر جولائی اور اگست 2021 کے مہینوں میں۔ یہ تقریبا3 323.8 ارب روپے تھا۔

چیئرمین ایف بی آر نے کمیٹی کو بتایا کہ ٹیرف میں فرق کی وجہ سے سیلز ٹیکس کی واپسی 22 ستمبر 2021 تک زیر التوا ہے۔ ان کا موقف تھا کہ ٹیرف ڈفرنشل پالیسی پر نظرثانی کی ضرورت ہے۔

انہوں نے ایف بی آر پر حالیہ سائبر حملے کے تناظر میں انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ ، آئی ٹی سیکٹر میں نمایاں سرمایہ کاری کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ ٹیکس سال 2020 سے پہلے زیر التوا آمدنی اور سیلز ٹیکس ریفنڈز کے حوالے سے پالیسی پر غور کرنا ضروری ہے جو جوٹی ایس جی کے ذریعے ختم کیا جانا چاہیے۔

کمیٹی ممبران نے ایف بی آر کی جانب سے محصولات کی وصولی میں نمایاں اضافے پر اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ آمدنی میں اضافہ درآمدات کی قیمت میں اضافے کی وجہ سے ہوا ، جو کہ ٹیکس نیٹ میں توسیع کے حوالے سے مثبت علامت نہیں تھی۔

اجلاس میں ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا ، سید نوید قمر ، جناب علی پرویز ، ڈاکٹر نفیسہ شاہ ، جناب امجد علی خان ، چوہدری خالد جاوید ، جناب صداقت علی خان عباسی ، مخدوم سید سمیع الحسن گیلانی نے شرکت کی۔ ، جناب فہیم خان ، جناب قیصر احمد شیخ اور سید حسین طارق کے علاوہ وزارت خزانہ ، ایف بی آر ، ہاؤسنگ اور تعمیرات ، سٹیٹ بینک آف پاکستان ، اکاؤنٹنٹ جنرل ، وزارت قانون و انصاف ، اور ایس ای سی پی کے سینئر حکام ملاقات چیئرمین آڈٹ نگرانی بورڈ اور دیگر سٹیک ہولڈرز بھی موجود تھے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

FATF decides to keep Pakistan on gray list

ایف اے ٹی ایف کا پاکستان کو گرے لسٹ میں رکھنے کا فیصلہ The Financial Action Task Force...

Sri Lanka Reached Super 12 defeating Ireland in T20 World Cup

سری لنکا نے ٹی 20 ورلڈ کپ میں آئرلینڈ کو شکست دے کر سپر 12 تک رسائی حاصل کرلی

Senate committee summoned the Finance Adviser and the Governor SBP on inflation

سینیٹ کمیٹی نے مہنگائی پر مشیر خزانہ اور گورنر اسٹیٹ بینک کو طلب کر لیا Taking note of...

Rupee hits new low against US dollar

امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپیہ تاریخ کی نئی گراوٹ ریکارڈ The Pakistani rupee hit a new record...

Recent Comments