Home Business Rising interest rates are detrimental to the economy and exports: traders

Rising interest rates are detrimental to the economy and exports: traders

شرح سود میں اضافہ معیشت اور برآمدات کے لیے نقصان دہ ہے: تاجر

Traders and exporters have termed the sudden rise in interest rates as detrimental to the economy and the export industry.

The decision of the Korangi Association of Trade and Industry (KATI) to increase the interest rate to 8.75% after raising the interest rate by 1.5% to 1.5% is detrimental to the economy and the highest production cost for the export industry. The cause is declared.

Kati President Salman Aslam said that the export industries were already facing difficulties and in such a situation a sudden increase in interest rates of 1.5 per cent would further increase the cost of production, giving industrialists expensive loans from banks which would lead to industry. Will face more difficulties.

He said that the monetary policy was expected to increase by 50 to 100 basis points but this unexpected decision taken by the SBP has raised concerns among the industrialists. An increase in exports is essential for the recovery of the economy, for which cheap loans are of paramount importance. However, monetary policy has been tightened due to increase in trade deficit and inflation.

He said that the industrialists were ready for all possible cooperation with the government to control inflation. The government should ensure cheap loans for the export sector so as to increase exports, increase foreign exchange reserves and strengthen the value of the dollar.

Kati President Salman Aslam appealed to the government to reduce the interest rate to 8% so that loans would be cheaper and small and medium enterprises would continue to use their full potential.

It is to be noted that the interest rate was increased by 1.50% by the State Bank of Pakistan yesterday after which the interest rate became 8.75%. The interest rate has been fixed for 2 months.

تاجروں اور برآمد کنندگان نے شرح سود میں اچانک اضافے کو معیشت اور برآمدی صنعت کے لیے نقصان دہ قرار دیا ہے۔

کورنگی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری (کاٹی) کی جانب سے شرح سود میں 1.5 فیصد سے 1.5 فیصد اضافے کے بعد شرح سود 8.75 فیصد کرنے کا فیصلہ معیشت کے لیے نقصان دہ ہے اور برآمدی صنعت کے لیے سب سے زیادہ پیداواری لاگت ہے۔ وجہ بتائی جاتی ہے۔

کاٹی کے صدر سلمان اسلم نے کہا کہ برآمدی صنعتیں پہلے ہی مشکلات کا شکار تھیں اور ایسی صورتحال میں شرح سود میں اچانک 1.5 فیصد اضافے سے پیداواری لاگت مزید بڑھ جائے گی، صنعتکاروں کو بینکوں سے مہنگے قرضے ملیں گے جس سے صنعتوں کو نقصان پہنچے گا۔ مزید مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔

انہوں نے کہا کہ مانیٹری پالیسی میں 50 سے 100 بیسس پوائنٹس تک اضافہ متوقع تھا لیکن اسٹیٹ بینک کے اس غیر متوقع فیصلے نے صنعتکاروں میں تشویش پیدا کردی ہے۔ معیشت کی بحالی کے لیے برآمدات میں اضافہ ضروری ہے جس کے لیے سستے قرضے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں۔ تاہم تجارتی خسارے اور مہنگائی میں اضافے کی وجہ سے مانیٹری پالیسی سخت کی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ صنعتکار مہنگائی پر قابو پانے کے لیے حکومت کے ساتھ ہر ممکن تعاون کے لیے تیار ہیں۔ حکومت برآمدی شعبے کے لیے سستے قرضوں کی فراہمی کو یقینی بنائے تاکہ برآمدات میں اضافہ ہو، زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ ہو اور ڈالر کی قدر مستحکم ہو۔

کاٹی کے صدر سلمان اسلم نے حکومت سے اپیل کی کہ شرح سود کو 8 فیصد تک کم کیا جائے تاکہ قرضے سستے ہوں اور چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری ادارے اپنی پوری صلاحیتیں بروئے کار لاتے رہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی جانب سے شرح سود میں 1.50 فیصد اضافہ کیا گیا تھا جس کے بعد شرح سود 8.75 فیصد ہوگئی تھی۔ شرح سود 2 ماہ کے لیے مقرر کی گئی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

Alia Bhatt made her fan cry

عالیہ بھٹ نے اپنے مداح کو رلا دیا Bollywood star Alia Bhatt recognized her fan even after 7...

Most watched match of Pak-India World Cup T20

پاک بھارت ورلڈ کپ ٹی20 کا سب سے زیادہ دیکھا جانے والا میچ The International Cricket Council (ICC)...

Taliban-U.S talks will resume in in Doha, Qatar

قطر کے دارالحکومت دوحہ میں طالبان امریکہ مذاکرات دوبارہ شروع ہوں گے Zabihullah Mujahid, a spokesman for the...

Dollar reached a record high of Rs 179

ڈالر 179 روپے کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا The dollar continued to soar, reaching a high...

Recent Comments