Home World Indian Diplomat Summoned Over India's Ceasefire Violation

Indian Diplomat Summoned Over India’s Ceasefire Violation

بھارت کی جانب سے سیز فائر کی خلاف ورزی پر بھارتی سفارتکار طلب

پاکستان نے پیر کو بھارتی سفارت کار کو طلب کیا اور لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے ساتھ ساتھ بھارتی قابض فورسز کے ذریعہ بے گناہ شہریوں کو نشانہ بنانے کے خلاف شدید احتجاج درج کیا۔

دفتر خارجہ (ایف او) کے ترجمان زاہد حفیظ چوہدری نے بھارتی فورسز کی طرف سے فائر بندی کی خلاف ورزیوں پر شدید احتجاج درج کرایا۔ ایف او نے بتایا کہ اس سال بھارت نے جنگ بندی کی 2820 سے زیادہ خلاف ورزیاں کی ہیں۔

اتوار کے روز ، بھارتی فوج نے کنٹرول لائن کے ساتھ ہی خضیرٹا سیکٹر میں بلا اشتعال فائر بندی کی خلاف ورزی پر چھ خواتین اور چار بچوں سمیت 11 شہری زخمی ہوگئے۔

آئی ایس پی آر نے مزید کہا کہ فوجیوں نے شادی کی تقریب پر راکٹوں اور بھاری مارٹروں سے حملہ کیا جس سے 11 افراد زخمی ہوئے جس میں 6 خواتین اور 4 بچے شامل ہیں۔

آئی ایس پی آر نے مزید کہا کہ جان بوجھ کر شہری آبادی کو خصوصا خواتین اور بچوں کو نشانہ بنانا اخلاقیات ، غیر پیشہ ورانہ پن اور بھارتی فوج کے ذریعہ انسانی حقوق کی سراسر نظرانداز کی عکاسی کرتا ہے اور ساتھ ہی 2003 میں جنگ بندی کی تفہیم کی بھی خلاف ورزی ہوتی ہے۔

اس سے قبل 13 نومبر کو ، بھارتی فوج کے جوانوں نے رخچیری اور کشمیر کے خنجر سیکٹرز میں جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا سہارا لیا تھا۔

(آئی ایس پی آر) کے مطابق ، بھارتی فوجیوں نے تاری بینڈ اور سماہنی دیہات میں شہری آبادی کو راکٹوں اور مارٹروں سے نشانہ بنایا تھا۔

آئی ایس پی آر نے کہا ، “پاک فوج کے جوانوں نے بھارتی فائرنگ کا موثر جواب دیا۔

آئی ایس پی آر نے ایک بیان میں کہا تھا کہ ایک شہری نے شہادت قبول کی ، دو خواتین سمیت تین شہری زخمی ہوئے ہیں۔

Pakistan on Monday summoned the Indian diplomat and lodged a strong protest against the targeting of innocent civilians by the Indian occupying forces along the Line of Control (LoC).

Foreign Office (FO) spokesman Zahid Hafeez Chaudhry lodged a strong protest against the ceasefire violations by Indian forces. The FO said India had committed more than 2,820 ceasefire violations this year.

On Sunday, 11 civilians, including six women and four children, were injured when the Indian Army violated an unprovoked ceasefire along the LoC in the Khuzerta sector.

The soldiers attacked the wedding party with rockets and heavy mortars, injuring 11 people, including six women and four children, the ISPR added.

The ISPR added that the deliberate targeting of the civilian population, especially women and children, reflected the moral, unprofessional and gross disregard for human rights by the Indian military, as well as the understanding of the 2003 ceasefire. Is also violated.

Earlier on November 13, Indian Army personnel resorted to ceasefire violations in the Rakhchiri and Kashmir dagger sectors.

According to ISPR, Indian troops fired rockets and mortars at civilians in Tariband and Samahni villages.

The ISPR said, “Pakistani troops responded effectively to the Indian firing.

The ISPR said in a statement that one civilian had testified and three others, including two women, had been injured.

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular

I Slapped Mufti Qavi On Harassment: Hareem Shah

میں نے ہراساں کرنے پر مفتی قوی کو تھپڑ مارا: حریم شاہ TikTok star Hareem Shah claimed "I...

Hackers Are Using A Windows 10 Feature To Damage Computers

ہیکرز کمپیوٹر کو نقصان پہنچانے کیلئے ونڈوز 10 کی خصوصیت استعمال کررہے ہیں Hackers are misusing the Windows...

Indian Team Is Not Willing To Participate In Asia Cup 2021

ہندوستانی ٹیم ایشیا کپ 2021 میں حصہ لینے کے لئے تیار نہیں ہے The Board of Control for...

Court Directs Sindh Government For Immediate Promotion Of Lectures

عدالت نے سندھ حکومت کو لیکچررز کی فوری ترقی کی ہدایت کی The Sindh High Court has directed...

Recent Comments